بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / امریکہ میں پاکستانی ملازم نوکری سے برطرف

امریکہ میں پاکستانی ملازم نوکری سے برطرف


واشنگٹن۔ امریکی ایوان میں ڈیموکریٹس کی نمائندہ ڈیبی واسرمین اسکلٹز نے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے پاکستانی نژاد اسٹاف ممبر کو ریاست ورجینیا کے ایک ایئرپورٹ پر گرفتاری کے بعد نوکری سے برطرف کردیا۔واسرمین اسکلٹز کے ترجمان ڈیوڈ ڈمرون نے بتایا کہ فلوریڈا کی قانون ساز نے آئی ٹی ڈپارٹمنٹ میں کام کرنے والے عمران اعوان نامی شخص کو اس وقت برطرف کیا جب وہ ورجینیا ایئر پورٹ سے لاہور جانے کی کوشش کرتے ہوئے گرفتار ہوئے تھے۔

عمران اعوان کے وکیل کرس گاوین نے بھی اپنے موکل کی گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کیا کہ عمران اعوان کو ڈلز ایئر پورٹ سے گرفتار کیا گیا۔انہوں نے بتایا کہ ان کے موکل نے معمول کے مطابق اپنے گھروالوں سے ملاقات کے لیے اپنے سفر کے بارے میں آگاہ کردیا تھا اور انہیں اس کی اجازت بھی مل گئی تھی۔ورجینیا کے علاقے لورٹن میں مقیم 37 سالہ عمران اعوان کو(25 جولائی) کو ڈسٹرکٹ کولمبیا کی مقامی عدالت میں بینک فراڈ کے الزام میں پیش کیا گیا تھا۔عدالت کے مطابق عمران نے اپنے بے قصور ہونے کی درخواست دی تھی جس کے بعد انہیں ایک کڑی نگرانی کے پروگرام کے تحت رہا کر دیا گیا، جس کے مطابق انہیں اپنے گھر سے 50 میل سے زیادہ دور سفر کرنے کی اجازت نہیں تھی۔

امریکی تحقیقاتی ادارے فیڈرل بیورو آف انویسٹی گیشن کے اسپیشل ایجنٹ برینڈن میری مین کی جانب سے مقامی عدالت میں ایک حلف نامی جمع کرایا گیا جس میں امکانات ظاہر کیے گئے کہ عمران اعوان اور ان کی اہلیہ حنا علوی نے کانگریس کے فیڈرل کریڈٹ یونین کی اسکیم میں غلط بیانی کرتے ہوئے قرضہ حاصل کرنے کا فراڈ کیا۔مجرمانہ شکایت کے حوالے سے جمع کرائے گئے اس حلف نامے میں کہا گیا کہ مذکورہ غلط بیانی ایک تحریری ضمانت کے گرد گھومتی ہے جس کے مطابق جس گھر کے لیے قرضہ لیا گیا وہ ایک بنیادی رہائش گاہ ہے۔