بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / چین پاکستان سے کئے گئے وعدوں پر قائم ہے ٗ لو کانگ

چین پاکستان سے کئے گئے وعدوں پر قائم ہے ٗ لو کانگ


بیجنگ۔چین نے دوبارہ یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ بیلٹ و روڈ منصوبے اور سی پیک کے ذریعے پاکستان کی سماجی و اقتصادی ترقی میں اس کا ساتھ دے گا ۔چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان لو کانگ نے یہاں پریس کانفرنس میں بتایا کہ ہم پاکستان کیساتھ اپنی سدابہار دفاعی تعاون پر مبنی شراکت داری کو زبردست اہمیت دیتے ہیں اور پاکستان کے ساتھ تجارت اور سرمایہ کاری میں اضافہ کرنے کے وعدے پر قائم ہیں ۔ترجمان نے کہا کہ حالیہ برسوں میں پاکستان میں چین کی براہ راست سرمایہ کاری جس میں طرفین کی ٹھوس کوششوں کی وجہ سے تیز رفتار ی سے اضافہ ہورہا ہے نے پاکستان کی سماجی و اقتصادی ترقی اور دوطرفہ عملی تعاون کو بڑھاوا دیا ہے، چین اس سے بہت خوش ہے ۔

ترجمان نے کہا کہ چین کی حکومت پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے اور اپنے کاروباری ادارے کھولنے کیلئے مجاز چینی کمپنیوں کی حوصلہ افزائی کرتا رہے گا اور باہمی طورپر سود مند تعاون کو فروغ دیا جائے گا ۔ترجمان نے کہا کہ جوں جوں چین پاکستان اقتصادی راہداری میں پیشرفت ہو گی پاکستان میں چین کی سرمایہ کاری میں اضافہ ہوتا جائے گا ۔ترجمان گذشتہ ہفتے پاکستان کے مرکزی بینک کی طرف سے جاری کئے جانیوالے اعدادوشمار جس کے مطابق چین پاکستان میں 2016-2017ء مالی سال میں 1.186بلین امریکی ڈالر غیر ملکی براہ راست سرمایہ کاری والے دوسرے ملکوں میں سرفہرست ہے پر تبصرہ کررہے تھے ۔

اس سرمایہ کاری کو پاکستان کی اقتصادی ترقی کیلئے انتہائی اہمیت کا گردانا جاتا ہے۔ چین کے وزیر خارجہ وانگ یی کے اس مبینہ بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے کہ ڈونگ لانگ میں چین بھارت بحران کا واحد حل یہی ہے کہ بھارت فوج جانبداری سے واپس چلی جائے۔لوکانگ نے کہا کہ وزیر کا مصدقہ بیان کافی واضح ہے اور اس کی مزید وضاحت کی ضرورت نہیں ہے جہاں تک علاقے میں فوجی ادغام کا تعلق ہے ترجمان نے وزارت اس بارے میں وزارت دفاع کے گذشتہ ہفتے کے بیان کا حوالہ دیا ، طرفین کے درمیان کسی مذاکرات کے بارے میں ترجمان نے واضح کیا کہ اس واقع کی بنیادی وجہ بھارتی فوج کی چینی علاقے میں غیر قانونی دراندازی ہے۔

اس مسئلے کو حل کرنے کے لئے بھارتی سرحدی فوج کو چاہئے کہ و ہ کسی چوں چرا کے بغیر نکل جائے جیسا کہ وزیر خارجہ وانگ یی نے کہا ۔ترجمان نے کہا کہ یہ کسی بامقصد مذاکرات کیلئے پیشگی شرط ہو گی ۔دلائی لامہ کے غیر ملکی دورے کے بارے میں ایک اور سوال کے جواب میں ترجمان نے کہا کہ چین نے متعلقہ ملک کے دلائی لامہ کے14ویں دورے کے بارے میں اپنا موقف واضح کر دیا ہے ۔

ترجمان نے اس بات زور دیا کہ شی ڈانگ سے متعلقہ مسائل کا تعلق چین کی خود مختاری اور علاقائی یکجہتی سے ہے ۔ترجمان نے کہا کہ ہمارا مطالبہ ہے کہ متعلقہ کو چاہئے کہ وہ چین کے بنیادی مفادات کا خلوص نیت سے احترام کرے اور اس بارے میں درست سیاسی فیصلہ کرے ، چین دوسرے ممالک کے داخلی امور میں مداخلت نہیں کرے گا تا ہم وہ نہیں چاہئے کہ کوئی اور ملک چین کے بنیادی مفادات کو نقصان پہنچائے ۔