بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / فاٹا میں اکثریت کیلئے سیاسی جماعتوں کی تیاریاں عروج پر

فاٹا میں اکثریت کیلئے سیاسی جماعتوں کی تیاریاں عروج پر


پشاور۔فا ٹاانضمام میں تاخیر کے بعدسیاسی جماعتوں نے اگلے عام انتخابات کے دوران فاٹا میں زیادہ سے زیادہ ووٹ حاصل کرکے علاقہ میں اپنی اپنی اہمیت بڑھانے کی غرض سے بھرپورتیاریاں شروع کردی ہیں اس سے قبل فاٹاکی تاریخ میں پہلی بار جماعتی بنیادوں پر ہونے والے انتخابات میں ووٹو ں کے حصول کی بنیاد پرپی ٹی آئی اور نشستوں کے لحاظ فاٹاکی سب سے بڑی جماعت کی حیثیت سے سامنے آئیں جے یو آئی دوسرے اورمسلم لیگ ن تیسرے نمبرپر رہی 2013ء کے عام انتخابات کے دوران فاٹا سے قومی اسمبلی کی کل بارہ میں سے گیارہ نشستوں پر مقابلہ ہوا جس میں آزاد امیدواروں کا پلڑا بھاری رہاجنہوں نے سات نشستیں حاصل کیں۔

ن لیگ نے دو،پی ٹی آئی اورجے یو آئی نے ایک ایک نشست اپنے اپنے نا م کی اے این پی ،پی پی،اور جماعت اسلامی کوئی نشست حاصل نہ کرسکی ،ان انتخابات میں فاٹا کے ووٹروں کی تعداد 13لاکھ سے زائدتھی جن میں سے 5لاکھ 14ہزار ووٹروں نے اپنا حق رائے دہی استعما ل کیا،جس میں سے آزاد امیدواروں نے تین لاکھ بائیس ہزار ووٹ حاصل کیے سیاسی جماعتوں کے امیدواروں نے ایک لاکھ 97ہزار سے زائد ووٹ حاصل کیے ووٹوں کے لحاظ سے تحریک انصاف سب سے بڑی جماعت بن کرسامنے آئی جس نے 55376ووٹ حاصل کیے دوسرے نمبرپر جے یو آئی رہی جسکے ووٹوں کی تعداد 49317رہی ،ن لیگ 37794ووٹوں کے ساتھ تیسرے اورجماعت اسلامی 35279ووٹ لے کر چوتھے نمبر پر رہیں،اے این پی نے صرف چودہ ہزار اور پی پی پی نے ساڑھے تیرہ ہزار ووٹ لیے فاٹا کی خیبر پختونخوامیں انضمام کی مخالفت کرنیوالے محمود خان اچکزئی کی جماعت نے صرف ایک حلقے میں امیدوار کھڑاکیاتھا جس نے محض 282ووٹ حاصل کیے تھے اب فاٹا میں اپنی مقبولیت ظاہر کرنے کے لیے اگلے عام انتخابات میں سیاسی جماعتوں نے بھرپور طریقے سے اپنے امیدواروں کو میدان میں اتارنے کی تیاریاں شروع کردی ہیں