بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / مشال قتل کیس ایبٹ آباد کی خصوصی عدالت منتقل

مشال قتل کیس ایبٹ آباد کی خصوصی عدالت منتقل

پشاور۔پشاورہائی کورٹ نے عبدالولی خان یونیورسٹی کے طالبعلم مشال خان قتل کیس مردان سے انسداددہشت گردی ایبٹ آباد کی عدالت منتقل کرنے اورہری پورجیل میں مقدمے کی سماعت کرنے کے احکامات جاری کردئیے ہیں عدالت عالیہ کے چیف جسٹس یحیی آفریدی اور جسٹس اشتیاق ابراہیم پرمشتمل دورکنی بنچ نے یہ احکامات گذشتہ روز مشال کے والد اقبال خان اور خیبر پختونخواحکومت کی جانب سے دائرایک ہی نوعیت کی دومختلف درخواستوں پرجاری کئے فاضل بنچ نے جمعرات کے روز رٹ کی سماعت شروع کی تو اس موقع پر اقبال خان کی جانب سے عبداللطیف آفریدی ایڈوکیٹ اورملزموں کی جانب سے بھی ان کے وکلاء پیش ہوئے ۔

صوبائی حکومت کی جانب سے ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل میاں ارشد جان عدالت میں پیش ہوئے اوربتایاکہ خیبرپختونخوا حکومت نے ہری پورجیل کومحفوظ ترین جیل قرار دیا ہے اوروہاں مقدمے کی سماعت بہ احسن طریقے سے ہوسکتی ہے ایبٹ آباد میں انسداددہشت گردی کی عدالت قائم ہے اورمذکورہ عدالت کے جج ہری پورجیل میں مقدمے کی سماعت کرسکتے ہیں تاہم مردان میں مقدمے کی سماعت اس لئے ممکن نہیں ہے کہ وہاں امن وامان کامسئلہ بن سکتاہے کیونکہ مشال قتل کیس میں نامزد ملزموں کے حامی بہت زیادہ ہیں اورمقدمے کی سماعت کے دوران کوئی بھی بدنظمی ہوسکتی ہے جبکہ استغاثہ کے گواہوں کی بھی فول پروف سکیورٹی ناگزیر ہے اسی طرح جج کاتحفظ بھی یقینی بنایاجاناچاہئیے ۔

ملزموں کی جانب سے ان کے وکلاء نے بتایا کہ مقدمے کی سماعت کے دوران ملزموں اورگواہوں کو تحفظ کی فراہمی حکومت کی ذمہ داری ہے اوریہ سکیورٹی مردان میں بھی فراہم ہوسکتی ہے جبکہ ہری پور میں مقدمے کی سماعت کے باعث مقدمے کی سماعت میں تاخیرہوسکتی ہے کیونکہ عدالت کی دوری کے باعث کبھی ایک وکیل نہ ہوگا اورکبھی دوسراطالبعلم مشال خان کے والد اقبال خان کی جانب سے دائررٹ پٹیشن کی سماعت کی جس میں موقف اختیار کیاگیاہے کہ مشال قتل کیس انتہائی حساس نوعیت کاکیس ہے اورکیس کی سماعت ابھی شروع نہیں ہوئی اورانہیں مختلف اقسام کی دھمکیاں مل رہی ہیں لہذامقدمے کی سماعت مردان کی بجائے ہری پوریاکسی دوسرے ضلع میں کی جائے ۔

فاضل بنچ نے دونوں جانب سے دلائل مکمل ہونے پرمشال قتل کیس انسداددہشت گردی مردان کی عدالت سے انسداددہشت گردی ایبٹ آباد کی عدالت منتقل کردیا اورمقدمے کی سماعت ہری پورجیل میں کرنے کے احکامات جاری کردئیے ہیں ۔