بریکنگ نیوز
Home / کالم / اسلام آباد ہائی کورٹ کافیصلہ

اسلام آباد ہائی کورٹ کافیصلہ


ہم یہ نہیں کہتے کہ ملک میں کرپشن نہیں ہے پی پی پی حکومت کے دور میں جب محترمہ بے نظیر بھٹو وزیر اعظم تھیں ہم نے ایک کالم میں ذکر کیا تھا کہ محترمہ فرماتی ہیں کہ ملک میں کرپشن ہے اگر ہے تو اس کو دور کرنے کیلئے کیا ہم کسی باہر کی طاقت کو بلائیں گے یا یہ ہماری محترمہ وزیر اعظم کی ذمہ داری ہے یہ ایک آدمی تو کہہ سکتا ہے کہ ملک میں کرپشن ہے اور یہ کہنے کی حد تک ہی ہو گا اگر ایک عام آدمی کرپشن کا گواہ بھی ہے تو بھی وہ اس کا تدارک نہیں کر سکتا اسلئے کہ اس کے ہاتھ میں کچھ بھی نہیں ہے نہ اُس کا ہاتھ ایف آئی اے تک پہنچ سکتا ہے ،نہ وہ نیب تک پہنچ سکتا ہے اور نہ ہی اُسکے وسائل اُسے اجازت دیتے ہیں کہ وہ سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹائے اسلئے کہ سپریم کورٹ سے انصاف حاصل کرنے کیلئے وکیل کی ضرورت ہے اور سپریم کورٹ کے سب سے جونیئر وکیل کی فیس کم از کم لاکھوں میں ہے تو ایک عا م آدمی کو سپریم کورٹ کا منہ دیکھنے کیلئے بھی ہزاروں روپے چاہئیں اور حکومت تو حکومت ہے اس کے وسائل بھی ہیں اور اُسکے ادرے بھی ہیں کرپشن کو لے کر تحریک انصاف باہر نکلی ہے ایک بہت ہی اچھا کام ہے مگر آپ ایک بہت ہی اچھا کام ایک برے طریقے سے کریں تو اُس کی ساری افادیت ختم ہو جاتی ہے ہم نے بارہا کہا ہے کہ آپ کی آزادی وہاں ختم ہو جاتی ہے جہاں میر ی ناک شروع ہوتی ہے ۔

اگر آپ کوکسی قسم کا جلسہ جلوس کرنا ہوتا ہے تو اُس کیلئے آپ پر لازم ہے کہ عام آدمی متاثر نہ ہوجب بھی کوئی جلوس نکالنے والی پارٹی اپنا آئینی حق استعمال کرنا چاہتی ہے تو وہ مثالیں یورپ اور انگلینڈ کی دیتی ہے ہم نے ٹی وی پر اُنکے جلوس بھی دیکھے ہیں جس سڑک پر بھی وہ جلوس جا رہا ہو اُس پر کبھی بھی ٹریفک جام ہوتی نہیں دیکھی پورا جلوس سڑک کے ایک کنارے پر بینرز اٹھائے جا رہا ہوتا ہے ہاتھوں میں پلے کارڈزاٹھائے ہوتے ہیں احتجاج ریکارڈ ہو جاتا ہے اللہ اللہ خیر سلا ۔ ہمارے ہاں جلوس ہو یا کسی وی وی آئی کی موومنٹ جب تک صبح سے شام تک دو چار سڑکیں بند نہ ہو جائیں ہم اُسے جلوس کہتے ہی نہیں ہیں اور ہماری جماعت اسلامی نے ایک نئی ایجاد کی ہے یعنی دھرنا۔ اور یہ ایسی ایجاد ہے کہ اس سے نہ صرف ایک آدھ دن لوگوں کو تکلیف ہوتی ہے بلکہ جب تک دھرنا جاری رہتا ہے لوگ مسلسل عذا ب میں رہتے ہیں اور سب سے بری بات یہ ہوتی ہے کہ اس کا نتیجہ کچھ بھی نہیں نکلتا۔مثلاً پی ٹی آئی او ر پی اے ٹی نے تاریخ کا طویل ترین دھرنا دیا کیا اس سے کوئی نتیجہ نکلا؟

کیا وزیر اعظم نے استعفیٰ دے دیاکیا جناب عمران خان کو باری مل گئی؟ سوائے اسکے کہ ہمارے یوتھ کو ایک نئی ٹرمینالوجی مل گئی اور کیا فائدہ ہوااور جو ٹرمینالوجی ان کو ملی جب یہ پی ٹی ائی کے خلاف استعمال کی گئی تو؟ اب کے جو دھرنے کی بات ہوئی ہے اس میں تو ملک کے دارالخلافے کو بند کرنے کی بات ہے ظاہر ہے کہ یہ کوئی بھی حکومت یا عوام برداشت نہیں کر سکتے اور اگر پی ٹی آئی مصر رہتی ہے تو جو نقصان عوام کا ہو گا اس کا ازالہ کیسے ہو گا؟ کوئی بھی اس بارے میں بات سننے کو تیار ہی نہیں مطلب یہ کہ ایک انسان کے وزیر اعظم نہ بننے کی سزا پورے ملک کے دارالخلافے کو بھگتنی ہے ۔اگر اسلام آباد بند ہو جاتا ہے تو خود سوچئے کہ اس دور میں حکومت کا کاروبار کیسے چلے گا اسلام آباد میں دنیا بھر کے سفارت خانوں کا بھی کم بند۔ اس کا مطلب یہ ہوا کہ شہر کو بلکہ پورے ملک کو اسی لئے اسلام آباد ہائی کورٹ نے عام آدمی کے مفاد میں فیصلہ دے کر ایسا کرنے سے پی ٹی آئی کو منع کر دیا ہے گو پی ٹی آئی کی تاریخ اس بارے میں کچھ قابل تعریف نہیں ہے اسلئے کہ ابھی تک جو حکم بھی کسی کورٹ نے دیا پی ٹی آئی کے کارندوں نے ماننے سے انکار ہی کیا ہے دیکھئے کہ اس ہائی کورٹ کے حکم کو پی ٹی آئی کی قیادت کس طرح سے لیتی ہے معاملہ چونکہ عام آدمی کے مفاد کا ہے اسلئے اس حکم کو سب کو ماننا چاہئے ۔