بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / مالی سال 2016 میں 167 ممبران اسمبلی کا رضاکارانہ ٹیکس ریٹرن جمع نہ کروانے کا انکشاف

مالی سال 2016 میں 167 ممبران اسمبلی کا رضاکارانہ ٹیکس ریٹرن جمع نہ کروانے کا انکشاف

اسلام آباد ۔ مالی سال 2016 میں 167 ممبران اسمبلی کی جانب سے رضاکارانہ ٹیکس ریٹرن جمع نہ کروانے کا انکشاف ہوا ہے ایف بی آر کی جانب سے شائع کردہ ٹیکس ڈائریکٹری میں بتایا گیا ہے کہ 2013 کے مقابلہ میں 2016 زیادہ ممبران اسمبلیوں نے ریٹرن جمع نہیں کروایا ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق مالی سال 2016 میں سینٹ ‘ قومی و صوبائی اسمبلیوں کے 167 ممبران نے ٹیکس ریٹرن فائل کیا ۔
کیا انکم ٹیکس آرڈینس کے تحت 1000 سی سی کار سے زئاد گاڑی رکھنے والے ‘ 250 فٹ سے زائد کا گھر اور میٹروپولیٹن میں 2000 مربع فٹ کا پارٹمنٹ رکھنے والے انکم ٹیکس فائل کرنے کا پابند ہیں ۔ ایف بی آر کے ترجمان کے مطابق 2016 میں ٹیکس ریٹرن فائل نہ کرنے والوں کو نوٹسسز جاری کریں گے ممبران کی تنخواہ سے ٹیکس کاٹ لیا جاتا ہے جب یہ ریٹرن فائل کروائیں گے تو پتہ چل جائے گا کہ انہوں نے ریٹرن فائل کیا یا نہیں ۔

انکم ٹیکس فائل نہ کرنے پر پانچ ہزار کم از کم جرمانہ ہے جو ٹیکس دینے والے پر 25 فیصد زیادہ سے زیادہ ہو سکتا ہے ۔ ٹیکس ڈائریکٹری کے مطابق 12 سینیٹرز ‘ 45 قومی اسمبلی کے اراکین جبکہ صوبائی اسمبلیوں کے 110 اراکین ریٹرن جمع نہیں کرایا ہے ۔