بریکنگ نیوز
Home / کھیل / مدثر نذر ڈومیسٹک سسٹم میں مستقل تبدیلیوں کے مخالف

مدثر نذر ڈومیسٹک سسٹم میں مستقل تبدیلیوں کے مخالف


کراچی: پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے ڈائریکٹر اکیڈمیز اور سابق ٹیسٹ کرکٹر مدثر نذر نے ڈومیسٹک اسٹرکچر میں تبدیلی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے ڈومیسٹک کیلئے ایک طویل المدتی سسٹم ہے اور ہر دو سال بعد سسٹم میں تبدیلی ایک مذاق ہے۔

یاد رہے کہ حال ہی میں پاکستان کرکٹ بورڈ کے بورڈ آف گورنرز کے اجلاس میں ڈومیسٹک سسٹم میں تبدیلی کا اعلان کرتے ہوئے ڈرافٹ سسٹم لانے کا اعلان کیا ہے جس کے تحت ٹیموں کی جانب سے 10 کھلاڑیوں کا انتخاب ڈرافٹ سسٹم جبکہ بقیہ دس کا روایتی طریقے سے ہو گا۔

پیر کو پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مدثر نذر نے کہا کہ میں ذاتی طور پر ڈومیسٹک اسٹرکچر میں تیزی سے تبدیلی کا مخالف ہوں، ڈومیسٹک کے لیے ایک لانگ ٹرم سسٹم ہونا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ بھارت میں 80 سال سے رانجی ٹرافی ہو رہی ہے لیکن تھوڑی بھی تبدیلی نہیں آئی۔ اسی طرح کاؤنٹی کرکٹ میں بھی اتنے بڑے عرصے میں معمولی تبدیلی ہی آئی ہے لیکن پاکستان میں ہر دو سال کے بعد ڈومیسٹک سسٹم میں تبدیلی ایک مذاق ہے۔

ڈائریکٹر اکیڈمیز نے کہا کہ کسی بھی ملک کا ڈومیسٹک سسٹم اس طرح تبدیل نہیں ہوا جیسا پاکستان میں ہوتا ہے اور میں ملک سے باہر ہونے کے باعث ڈرافٹ سسٹم پر اپنی رائے نہیں دے سکا۔

مدثر نے کہا کہ اکیڈمیز کی جتنی ضرورت پاکستان میں ہے کسی اور ملک کو نہیں، کراچی اکیڈمی ابھی تک مکمل نہں ہوئی اور اگر میرے بس میں ہوتا تو کراچی اکیڈمی بہت پہلے تیار ہوجاتی۔

سابق آل راؤنڈر عبدالرزاق کی جانب سے آل راؤنڈرز کی کھوج کے اعلان کے حوالے سے ڈائریکٹر اکیڈمیز نے کہا کہ عبدالزاق کے پاس کوئی پلان ہے تو ہم سے شیئر کریں اور اگر وہ ہمارے ساتھ کام کریں گے تو خوشی ہوگی۔