بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / رانا ثناء اللہ ، شہباز شریف کو وزیراعظم بنانے کے مخالف

رانا ثناء اللہ ، شہباز شریف کو وزیراعظم بنانے کے مخالف

لاہور۔ پنجاب کابینہ کے بااثر رکن رانا ثناء اللہ نے وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کو وزیراعظم متخب کرانے کے لیے ان کے قومی اسمبلی جانے کی مخالفت کردی۔مری میں ہونے والے ایک اہم مشاورتی اجلاس میں وزیرِ قانون پنجاب رانا ثناء4 اللہ نے تجویز پیش کی کہ ‘اگر وزیراعلیٰ شہباز شریف وزیراعظم کے دفتر تک پہنچ جاتے ہیں تو اقتدار کی بقیہ مدت میں ن لیگ کی توجہ ترقیاتی ایجنڈے سے ہٹ کر انتخابی عمل پر مرکوز ہوجائے گی۔

28 جولائی کو سپریم کورٹ کی جانب سے سابق وزیراعظم نواز شریف کو نااہل قرار دیے جانے کے تناظر میں رانا ثناء اللہ کا کہنا تھا کہ ‘گذشتہ جمعے کو ہونے والی افراتفری کے بعد ہمیں خود کو 45 روز کی انتخابی افراتفری پر مجبور نہیں کرنا چاہیے’۔ میڈیا سے گفتگو میں رانا ثناء اللہ نے دعویٰ کیا کہ پارٹی قیادت نے وعدہ کیا تھا کہ شاہد خاقان عباسی کے وزیراعظم کا عہدہ سنبھالنے کے بعد اس تجویز اور ان کی دیگر دو قانونی گزارشات پر سنجیدگی سے غور کیا جائے گا۔

رانا ثناء اللہ، جو خود بھی ایک وکیل ہیں، کا کہنا تھا کہ انہوں نے قیادت کو آگاہ کیا ہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کو ‘فیصلے کی غلطی’ قرار دے کر اْلٹا جاسکتا ہے اگر لارجر بینچ فیصلے کے خلاف جائزہ پٹیشن کی بطور اپیل سماعت کرتا ہے، کیونکہ انکم ٹیکس قانون کے تحت ‘قابل وصول اثاثہ جات’ کو اثاثے قرار نہیں دیا جاسکتا۔انہوں نے خیال ظاہر کیا کہ اگر نواز شریف کو تاحایت نااہل نہیں کیا جاتا تو وہ دوبارہ انتخابی سیاست کا حصہ بن سکتے ہیں۔

انہوں نے جسٹس (ر) افتخار چیمہ کی مثال دیتے ہوئے بتایا کہ 2013 میں این اے 101 (گجرانوالہ) سے کامیابی حاصل کرنے والے جسٹس (ر) افتخار چیمہ کو اثاثے چھپانے پر بعد ازاں سپریم کورٹ نے نااہل قرار دے دیا تھا تاہم گذشتہ سال ہونے والے ضمنی انتخابات میں انہیں الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی گئی۔

ان تمام بنیادوں کو مدنظر رکھتے ہوئے نواز شریف سیاست میں واپس آسکتے ہیں اور شہباز شریف کو وزیراعلیٰ پنجاب کے عہدے سے وفاقی حکومت میں لانے کی ضرورت نہیں۔دوسری جانب چند ٹی وی چینلز کے مطابق، لیگی قیادت آئندہ عام انتخابات تک شاہد خاقان عباسی کو وزیراعظم کے عہدے پر برقرار رکھنے پر سنجیدگی سے غور کررہی ہے۔