بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / نوازشریف سے لیڈری کوئی نہیں چھین سکتا، چوہدری نثا ر

نوازشریف سے لیڈری کوئی نہیں چھین سکتا، چوہدری نثا ر


روات۔ سابق وفاقی وزیر داخلہ اور مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما چوہدری نثار علی خان نے کہا ہے کہملک کو بہت بڑے خطرات درپیش ہیں مگر ہم لوگ آپس کے جھگڑوں میں پڑے ہیں، ایک دوسرے سے گالم گلوچ میں مصروف ہیں اور بیرونی خطرات کی کسی کو کوئی پرواہ نہیں، ہم نے مل کر اس ملک کو مشکلات سے نکالنا ہے ،، ملک میں حکومتوں کو خوشامد کے کلچرکی بیماری کھاگئی ہے سب سے پہلے پارٹی کو مضبوط کرنا ہے، کسی کو شک و شبہ نہیں ہونا چاہیے، یہ پارٹی انشاء اللہ نواز شریف کی قیادت میں ہی مضبوط ہو گی، ان سے وزیراعظم کا عہدہ تو لے لیا گیا مگر لیڈری کا عہدہ کوئی نہیں چھین سکتا ، یہ عہدہ عوام نے ان کو دیا ہے، آئندہ چند دن میں وضاحت کروں گا کہ میں کابینہ میں کیوں شامل نہیں ہوا،سیاست میں عزت بہت تھوڑی رہ گئی ،میراعلاقہ وفاداروں اورپاکستان سے محبت کرنے والوں کا علاقہ ہے، میں اپنے علاقے میں 2میگا منصوبوں کا افتتاح کرنے آیا ہوں، پاکستانی سیاست میں سچ اور جھوٹ میں بہت تھوڑا فرق رہ گیا ہے، عزت عہدوں میں نہیں کردار میں ہوتی ہے۔

خوش قسمتی ہے کہ عوام کی فوج 1985سے میرے پیچھے چٹان کی طرح کھڑی ہے،اصل وفاداری یہ ہے کہ لیڈر کے سامنے سچ بات کی جائے اور خوشامد نہ کی جائے،ملک میں (ن) لیگ کی حکومت آتی ہے تو ترقی ہونے لگتی ہے،مخالفین سے 8سالوں میں ایک میگاپراجیکٹ نہیں بنا، سڑکیں، ہسپتال اور سی پیک بنتا ہے،اتنے لوگوں کا جمے غفیر کا اکٹھنا ہونا واضح کرتا ہے کہ لوگ حق اور سچ کے ساتھ کھڑے ہونا جانتے ہیں۔ وہ جمعہ کو وزارت چھوڑنے کے بعد پہلی مرتبہ منظر عام آنے پر روات میں بہت بڑے عوامی جلسے سے خطاب کر رہے تھے۔ چوہدری نثار علی خان نے کہا کہ میرا حلقہ وفاداروں کا اور پاکستان سے محبت کرنے والوں کا علاقہ ہے، میں نے آج بہت سی دل کی باتیں آپ سے کرنی تھیں اور ملکی حالات کے حوالے سے بھی بہت سی باتیں کرنی تھیں، مگر دو چیزیں اس میں رکاوٹ بن گئی ہیں، ایک یہ کہ اس وقت بھی جی ٹی روڈ مکمل طور پر بلاک ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج میں دو بڑے منصوبوں کا افتتاح کرنے آیا ہوں، روات سے لے کر سرال چوک تک2 ارب اور18کروڑ روپے کی لاگت سے کارپٹڈ سڑک بنائی جائے گی، دوسرا منصوبہ یہ ہے کہ یہاں پر 65کروڑ روپے کی لاگت سے تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال بنایا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ میں نے صرف اخبار میں ایک خبر دی تھی اس جلسے کی، کسی کو گاڑی بھیج کے نہیں بلوایا،پھر بھی اتنے لوگوں کا جمے غفیر کا اکٹھنا ہونا واضح کرتا ہے کہ لوگ حق اور سچ کے ساتھ کھڑے ہونا جانتے ہیں، آج سیاست بہت مشکل ہو گئی ہے اور سیاست میں عزت بہت تھوڑی رہ گئی ہے، حرام اور حلال میں فرق نہیں چھوڑا گیا، لوگوں کو علم نہیں کہ حق پہ کون ہے اور جھوٹا کون ہے۔ چوہدری نثار علی خان نے کہا کہ میں خطہ پوٹھوہار کے لوگوں کو گواہ بنا کر کہتا ہوں کہ جب مسلم لیگ (ن)کی حکومتی آتی ہے تو سڑکیں، ہسپتال اور سی پیک بنتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کے دور حکومت میں ہر قسم کے ترقیاتی کام ہوتے ہیں اور مخالفین اقتدار میں آتے ہیں تو سب کام ٹھپ ہو جاتے ہیں،8سال ہمارے مخالف اقتدار میں رہے مگر کوئی ایک میگاپراجیکٹ بتادیں جو ان کے دور میں بنا ہو۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے چار سالوں میں صرف اس علاقے میں نہیں بلکہ پورے پاکستان میں ترقیاتی کام ہو رہے ہیں، میں افتتاح کرنے آیا تھا مگر ٹریفک بلاک ہے تو افتتاح نہیں کر سکا، مگر صرف آپ سے چند سوال کروں گا کہ حق اور سچ کا علم بلند کرنا، آپ اس پر اعتماد کرتے ہیں یا نہیں؟مسلم لیگ (ن) کے مشکل ترین وقت میں آپ مسلم لیگ(ن) اور سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کی حمایت کرتے ہیں یا نہیں۔

جس پر عوام نے نعرہ لگایا کہ ہم حمایت کرتے ہیں۔سابق وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے کہاکہ جب تک آپ جیسے لوگ پاکستان میں موجود ہیں حق و صداقت کی آواز بلند ہوتی رہے گی، ملک کو بہت خطرات درپیش ہیں مگر ہم لوگ آپس کے جھگڑوں میں پڑے ہیں،ہم ایک دوسرے سے گالم گلوچ میں مصروف ہیں، ہمیں بیرونی خطرات کی پرواہ نہیں ہے،بہت مسائل پر باتیں ہوتی رہیں گی۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ چند دن میں وضاحت کروں گا کہ میں کابینہ میں کیوں شامل نہیں ہوا، آپ کو بتا دوں عزت عہدوں میں نہیں کردار میں ہوتی ہے، میں پاکستان کا خوش قسمت شخص ہوں جس کے پیچھے عوام کی فوج ہے جو 1985 سے میرے پیچھے چٹان کی طرح کھڑے ہیں، اچھے برے وقت میں آپ لوگوں نے میرا ساتھ دیا۔ چوہدری نثار نے کہا کہ میں سمجھتا ہوں کہ اصل وفاداری یہ ہے کہ لیڈر کے سامنے سچ بات کی جائے اور خوشامد نہ کی جائے،کسی کو اچھی لگے نہ لگے مگر میں سچی بات کرتا رہوں گا، اس ملک میں حکومتوں کو جو بیماری کھا گئی وہ خوشامد کا کلچر ہے، ہم نے مل کر اس ملک کو مشکلات سے نکالنا ہے اور سب سے پہلے پارٹی کو مضبوط کرنا ہے، کسی کو شک و شبہ نہیں ہونا چاہیے، یہ پارٹی انشاء اللہ نواز شریف کی قیادت میں ہی مضبوط ہو گی، ان سے وزیراعظم کا عہدہ تو لے لیا گیا مگر ان سے لیڈری کا عہدہ کوئی نہیں چھین سکتا کیونکہ یہ عہدہ عوام نے ان کو دیا ہے۔اس موقع پر جلسے میں لوگوں نے رو عمران رو کے نعرے لگائے۔ چوہدری نثار نے کہا کہ میں آپ کے ساتھ ہوں آئندہ دس مہینوں میں پارٹی کو اور مضبوط کرنا ہے میں یہاں بھی اور پورے پاکستان میں کارکنوں کے ساتھ ہوں، ہم نے پارٹی اور ملک کو مضبوط کرنا ہے، جس کیلئے آپ لوگوں کو ہر صورت میرا ساتھ دیناہو گا۔