بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / ہمیں قربانیوں کا صلہ نہیں ملا ٗ آفتاب شیرپاؤ

ہمیں قربانیوں کا صلہ نہیں ملا ٗ آفتاب شیرپاؤ


پشاور۔قومی وطن پارٹی کے مرکزی چیئرمین آفتاب احمد خان شیرپاؤ نے کہا ہے کہ قومی وطن پارٹی پختونوں کے حقوق کے لئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گی اور خطے میں امن کے قیام کے لئے بھرپور کردار ادا کرتی رہے گی۔انہوں نے کہا کہ پختونوں نے ملک کی خاطر بے تحاشہ قربانیاں دی ہیں لیکن ا فسوس کی بات ہے کہ ان کو ان قربانیوں کا صلہ نہیں دیا گیا ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے وطن کور پشاور میں پارٹی کی صوبائی مجلس عاملہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

اس موقع پر پارٹی کے صوبائی چیئرمین سکندر حیات خان شیرپاؤ ‘صوبائی جنرل سیکرٹری ہاشم بابر‘صوبائی کابینہ کے اراکین ‘زونز اور تمام اضلاع کے چیئرمین و جنرل سیکرٹریز بھی موجود تھے ۔آفتاب شیرپاؤ نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قومی وطن پارٹی پختونوں اور غریب طبقہ کی نمائندہ جماعت ہے اور وہ ان کی فلاح کے لئے جدوجہد کرتی رہے گی انہوں نے کہا کہ قومی وطن پارٹی چاہے حکومت میں ہو یا اپوزیشن میں دونوں صو رتوں میں عوام کی خدمت کو فرض اولین سمجھتی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ پارٹی جمہوریت کی علمبردار ہے اور چاہتی ہے کہ موجودہ پارلیمنٹ اپنی مدت پوری کرے کیونکہ ملک میں جمہوری نظام کی تقویت کی بدولت جمہوری ادارے مضبوط ہوں گے اور ملک میں معاشی خوشحالی کا دور دورہ ہو گا انہوں نے تشویش کا اظہار کیا کہ پانامہ ایشو کی وجہ عوام کے بنیادی مسائل جیسے لوڈشیڈنگ‘پختونوں کے حقوق ‘فاٹا کا خیبرپختونخوا میں انضمام‘پاک چائنا راہداری منصوبہ‘دہشت گردی اور بے گھر افراد کی آباد کاری پس پشت چلے گئے جس کی وجہ عوام کی محرومیوں میں حد درجے اضافہ ہوا ۔

انہوں نے پارٹی عہدیداران کو مخاطب کرتے کہا کہ وہ عوام کے ساتھ اپنے رابطے مضبوط بنائے ان کے مسائل اجاگر کرنے کے لئے اپنا کردار ادا کرے ا جلاس میں موجودہ صورتحال ‘پارٹی کے تنظیمی امور پر سیر حاصل بحث کی گئی اور آئندہ کیلئے حکمت عملی ترتیب دیدی گئی اجلاس نے پارٹی آفتاب ا حمد خان شیرپاؤ اور صوبائی قائد سکندر حیات خان شیرپاؤ کی قیادت اور پارٹی پالیسیوں پر اپنے مکمل اعتماد کا اظہار کیا ایک قرار داد کے ذریعے وفاقی حکومت سے فاٹا کا خیبرپختونخوا میں فوری انضمام کا مطالبہ کیا گیا ۔

ایک اور قرار داد میں عوام کے بڑھتے ہوئے مسائل اور امن وامان کی ابتر صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا گیا اجلاس میں کہا گیا کہ پانامہ ایشو اب ختم ہو چکا ہے لہٰذا اب وفاقی حکومت ملک میں بدامنی کے خاتمے اور عوام کے بنیادی مسائل کے حل پر اپنی توجہ مرکوز کرے۔