بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / میری نااہلی کا فیصلہ پہلے ہی ہو چکا تھا ٗنواز شریف

میری نااہلی کا فیصلہ پہلے ہی ہو چکا تھا ٗنواز شریف

اسلام آباد۔ سابق وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ ادارے ایک دوسرے کا احترام کریں گے تو ملک ترقی کرے گا ،ایک دوسرے کی ٹانگیں کھیچنے سے ہم آگے نہیں بڑھ سکتے،نااہلی کا فیصلہ پہلے ہی چکا تھا بس صرف جواز ڈھونڈا گیا،چار سالہ دور کیسے گزارا یہ صرف میں ہی جانتا ہوں ،ہمارے خلاف نیب میں کیسز بھیجے گئے جس کی نگرانی خود سپریم کورٹ رہی ہے اگر ہمیں نیب کیخلاف اپیل کرنی تو کس سے کریں کس سے منصفی چاہئیں، مجھے سسلین مافیا کہا گیا ،کروڑوں عوام نے منتخب کیا ،پانچ معزز جج صاحبان نے نااہل قرار دیدیا ،ملک کی خدمت کرنا چاہتا ہوں ،ہم70سال تک اپنے ملک کی سمت ٹھیک نہیں کر سکے۔

کچھ لوگ مل کر ملک کی سمت ٹھیک کر دیں ،میڈیا ،سول سوسائٹی اور سیاست دانوں کو مل بیٹھ کر اس کا جواب ڈھونڈنا ہوگا ۔پیر کے روز پنجاب ہاؤس میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیر اعظم نواز شریف نے کہا کہ ایک بیٹے سے پیسے لینے سے بات شروع ہوئی اور دوسرے بیٹے سے تنخواہ نہ لینے پر معاملہ ہی ختم کردیا گیا ایسی نااہلی بہت بڑا مذاق ہے، ڈیرھ سال تک بے رحمانہ احتساب ہوا لیکن اب میں یہی نااہلی کا سرٹیفکیٹ لیکر عوام کے پاس جاؤں گا اوران سے انصاف طلب کروں گا۔ انہوں نے کہا کہ سوچنے والی بات ہے کہ آئین تو بنایا گیا لیکن مارشل لاء پھر بھی لگتے رہے 1973ء کے بعد بھی ڈکٹیٹر آئے لیکن کوئی وزیر اعظم بھی اپنی مدت پوری نہیں کرسکا۔

انہوں نے کہا کہ پانامہ کیس میں ججوں نے پہلے درخواست خارج کی لیکن پھر معلوم نہیں کہ درخواست کو کیسے قبول کر لیا جے آئی ٹی میں بھی تحقیقات کیلئے مخالفین کو ڈالا گیا اور ججوں نے بھی اپنی آبزوریشن میں کہا کہ مجھ پر کوئی الزام نہیں اور پھر ایک بیٹے سے پیسے لینے سے بات شروع کی اور دوسرے بیٹے سے تنخواہ لینے پر معاملہ ختم کرکے مجھے نااہلی کردیا گیا ایسی نااہلی مذاق نہیں تو اور کیا ہوسکتا ہے نواز شریف نے کہا کہ ڈ یڑھ سال تک میرا بے رحمانہ احتساب کیا ایسا ظلم تاریخ میں کسی کے ساتھ نہیں ہوا جیسا میرے ساتھ ہوا لیکن اب یہی ناہلی کا سرٹیفکیٹ عوام کے پاس جاؤں گا اور انہیں سے انصاف طلب کروں گا،کل بحالی کے لئے نہیں بلکہ گھر جارہا ہوں ،انہوں نے کہا کہ نیب قانون کا خاتمہ چاہتا تھا کہ تاہم اس کا موقع نہیں مل سکا۔