بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / حسین نواز کی تصویر لیک کا معاملہ تاحال معمہ

حسین نواز کی تصویر لیک کا معاملہ تاحال معمہ


اسلام آباد۔ جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم (جے آئی ٹی ) کی جانب سے حسین نواز کی تصویر لیک کرنے والے شخص کا نام فراہم کیے جانے کے باجود اٹارنی جنرل اشتر اوصاف نام پبلک کرنے سے گریزاں ہیں ، تفصیلات کے مطابق عدالت عظمیٰ کے حکم پر شریف خاندان کی مبینہ کرپشن کی تحقیقات کرنے والے جے آئی ٹی کے سربراہ واجد ضیاء کی جانب سے حسین نواز کی جے آئی ٹی میں پیشی کے دوران تصویر لیک کرنے والے شخص کا نام اٹارنی جنرل کو بتا دیا گیا ہے تاہم تین ہفتے سے زائد عرصہ گزر جانے کے باجود اٹارنی جنرل نے تاحال نام پبلک نہیں کیا ہے جبکہ جے آئی ٹی کی کارروائی کے دوران مسلم لیگ ن نے تصویر لیک کے معاملے کو حسین نواز کی تحضیک قرار دیتے ہوئے ۔

اس پر احتجاج کیا تھا اور سپریم کورٹ میں بھی درخواست دائر کی تھی ، سپریم کورٹ میں حسین نواز کی جانب سے خواجہ حارث ایڈووکیٹ نے تصویر لیک کے معاملے پر بحث کی تھی جس پر سپریم کورٹ نے جے آئی ٹی کے سربراہ واجد ضیاء کو تصویر لیک کرنے والے شخص کا نام اٹارنی جنرل کو بتانے کے حکم دیا تھا اور نام پبلک کرنے کا اختیار بھی حکومت کو دیدیا گیا تھا تاہم نام موصول ہونے کے بعد اٹارنی جنرل نام پبلک کرنے سے گریز کر رہے ہیں اور حکومت وزراء اور سوشل میڈیا ٹیم نے بھی اس معاملے پر لب کشائی کرنے سے اجتناب کر نا شروع کردیا ہے ، سپریم کورٹ میں بھی اٹارنی جنرل سے صحافی اس حوالے سے متعد بار سوال کر چکے ہیں تاہم اٹارنی جنرل نام بتائے بغیر معاملے کو ٹال کر چلے جا تے ہیں ۔