بریکنگ نیوز
Home / اداریہ / اہم فیصلوں کیلئے اتفاق کی ضرورت

اہم فیصلوں کیلئے اتفاق کی ضرورت


انتخابی اصلاحات سے متعلق پارلیمانی کمیٹی کی تیار کردہ رپورٹ ایوان بالا میں پیش کردی گئی ہے، وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا کہنا ہے کہ آئندہ انتخابات نئے قانون کے تحت ہونے کی امید ہے، وزیر خزانہ کا کہنا ہے کہ کمیٹی نے 8قوانین کا جائزہ لیا تاکہ ضروری تبدیلیاں کی جاسکیں، مہیا تفصیلات کے مطابق پیپلزپارٹی، تحریک انصاف، جے یو آئی ف ، جماعت اسلامی اور ایم کیو ایم کے اختلافی نوٹ بھی رپورٹ میں شامل کئے گئے ہیں، انتخابی اصلاحات کیلئے قائم کمیٹی کی رپورٹ فائنل کرنے سے قبل 129اجلاس ہوئے، پارلیمانی کمیٹی نے اس ضمن میں وکلاء سول سوسائٹی اور میڈیا کے نمائندوں سے بھی تجاویز حاصل کی ہیں جن کی تعداد 1200بتائی جارہی ہے، اس بات سے قطع نظر کہ رپورٹ میں اصلاحات کے حوالے سے کیا کیا تجاویز شامل کی گئی ہیں، وطن عزیز میں انتخابی اصلاحات اور جمہوری عمل کے مستحکم و بہتر بنانے کی ضرورت اپنی جگہ موجود ہے جس کیلئے سب کے موقف کو سننا ہوگا، چیئرمین سینٹ رضا ربانی پارلیمنٹ کو مستحکم بنانے کی ضرورت پر زور دے رہے ہیں، وہ داخلی کمزوریوں پر قابو پانے اور پارلیمنٹ کو پالیسی سازی کا اہم محور ومرکز بنانے کو بھی ناگزیر قرار دیتے ہیں،وطن عزیز کی سیاسی قیادت ماضی میں بہت سارے اہم معاملات سیاسی طورپر مل بیٹھ کے حل کرتی رہی ہے۔

سیاسی اختلافات اور ایوان کے اندر حکومتی واپوزیشن بنچوں کے درمیان نوک جھونک ہمیشہ سے ہی چلی آرہی ہے اور جمہوری معاشروں میں یہ سب ہوتا ہی ہے، اس سب کیساتھ ضرورت اہم معاملات پر مشترکہ حکمت عملی ترتیب دینے کی بھی ہے، انتخابی اصلاحات اور پارلیمنٹ سے متعلق امور کیساتھ سیاسی قیادت کو عوام کے مسائل پر بھی یکجاہوکر پلاننگ کرنا ہوگی، اس بات کا احساس بھی ناگزیر ہے کہ سیاسی تناؤ اور کشمکش کی کیفیت اکانومی کو متاثر کرتی ہے، یہ بھی مدنظر رکھنا ہوگا کہ سرمایہ کاری کیلئے ماحول کو زیادہ سے زیادہ سازگار بنانا ضروری ہے، عوام کو لوڈشیڈنگ کے اندھیروں سے نکالنا بھی ہے اور انہیں بنیادی سہولیات بھی فراہم کرنی ہیں جو سب جامع حکمت عملی کی متقاضی ہیں۔

ڈینگی وائرس کا انتظار کیوں؟

ضلع ناظم پشاور نے تہکال کو پانی فراہم کرنیوالی ٹینکی کی فوری صفائی کا حکم دیا ہے، یہ ٹینکی 1981ء میں تعمیر ہوئی اور ضلع ناظم کے دفتر سے جاری تفصیل میں بتایا گیا ہے کہ 36سال میں اسے صاف نہیں کیاگیا، ضلع ناظم نے ڈسٹرکٹ ممبر کی نشاندہی پر اس کی فوری صفائی کا حکم دیا ہے، پانی کے اس ٹینک کی صفائی کا حکم قابل اطمینان ہے اور تہکال میں ڈینگی سے بچاؤ کیلئے دیگر اقدامات بھی ناگزیر ہیں، اس سب کیساتھ دیگر علاقوں میں بھی پانی کے ٹینک صاف کرنے ‘ سیوریج سسٹم کوکلیئر کرکے رواں کرنے اور سپرے کے کام کیلئے فوری احکامات کی ضرورت موجود ہے، اس ضرورت کا بروقت احساس نقصان سے بچاؤ میں معاون ثابت ہوگا، ہماری انتظامیہ کو اس طرح کے اقدامات کیلئے ڈینگی اور دیگر بیماریوں کے پھیلنے کا انتظار نہیں کرنا چاہئے، آج بھی اگر ہم نے بروقت کوئی اقدامات اٹھائے ہوتے تو یوں ڈیڈلائنز دینے کی ضرورت ہی نہ پڑتی۔