بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / لیٹروں کے کڑے احتساب کاوقت آچکا ہے ٗ پرویز خٹک

لیٹروں کے کڑے احتساب کاوقت آچکا ہے ٗ پرویز خٹک

پشاور ۔ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے کہا ہے چوروں اور لیٹروں کے کڑے احتساب کاوقت آچکا ہے۔ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی جد وجہد کی بدولت حکمران ٹولے کے سربراہ نوازشریف سمیت اس کا پورا خاندان قانون کے شکنجے میں آچکا ہے۔ یہ ابتداء ہے آگے آگے دیکھئے مزید چوروں اور لیٹروں کو احتساب کے کٹہرے میں کھڑا کریں گے او ر عمران خان کاکہنا ہے قومی دولت لوٹنے والوں سے ایک ایک پائی وصول کی جائے گی۔

خیبرپختونخوا کی صوبائی حکومت بھی کرپشن اور رشوت میں ملوث بیورو کریٹس اور سیاست دانوں کو ہر گز معاف نہیں کرے گی۔ ہم یہ دعویٰ تو نہیں کرتے کہ ہم نے سوفیصد رشوت اور کمیشن ختم کردی مگر بڑی حدتک رشوت اور کمیشن میں واضح کمی آچکی ہے۔ پی ٹی آئی صوبے کی سیاسی تاریخ بدلنے جارہی ہے۔ ہماری حکومت کا آخری سال ہے اس کے باوجود بڑی بڑی شخصیات اور کارکن دوسری پارٹیاں چھوڑ کرپی ٹی آئی میں شامل ہورہے ہیں ۔

2018 کے انتخابات کے لیے ایسی حکمت عملی وضع کرلی ہے دوسری پارٹیوں کو تگنی کاناچ نچائیں گے۔ ابھی سے تحریک انصاف کی مقبولیت سے خائف جماعتیں اتحاد بنا رہی ہے۔ صحافی ملک کے افق پر ہونے والے واقعا ت کا مشاہدہ کریں اور اپنی پیشہ ورانہ ذمہ داریوں کا ادراک کرتے ہوئے ان کی حقیقی تصویر کشی کریں۔ وہ نوشہرہ میں میڈیا کالونی کے سنگ بنیاد اور مانکی شریف میں کیٹگری ڈی ہسپتا ل کے افتتاح کے موقع پر جلسوں سے خطاب کرہے تھے۔

اس موقع پر وزیر ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن میاں جمشید الدین کاکا خیل، ایم این اے عمران خٹک، ضلع ناظم نوشہرہ لیاقت خٹک، نوشہرہ پریس کلب کے صدر حاجی مشتاق احمد پراچہ اور ڈپٹی جنرل سیکرٹری ولی شاہ اور پیر تاجمیر شاہ نے بھی خطاب کیا۔ جبکہ اس موقع پرایم پی اے خلیل الرحمان، ضلعی نائب ناظم اشفاق خٹک حسین احمد خٹک ،حاجی نوشیر خان، ملک ابرار، امجد اعظم عرف قائد اعظم ، حاجی محمد ریاض ایڈوکیٹ اور فضل ودودخان ، وزیر اعلیٰ کے صاحبزادے اسحق خٹک بھی موجود تھے وزیراعلیٰ نے کہا کہ اس ملک میں پہلی بار ملک کے وزیر اعظم پر ہاتھ ڈالا گیااور وزیر اعظم کے پورے خاندان کی کرپشن بے نقا ب ہوگئی۔

پرویز خٹک نے کہا کہ وہی نوازشریف جو دھرنوں احتجاجوں کی سیاست کی مخالفت کررہے تھے عمران خان پر تنقید کررہے تھے آج معلوم نہیں کہ اپنی ہی حکومت میں ہوتے ہوئے لانگ مارچ کس کے خلاف کیا اور خود بھی کنٹینر پر چڑھ گئے انھوں نے اے این پی اور پی پی پی پرکڑی تنقید کی اور کہا کہ ان کادور ختم ہوچکا ہے۔ میں نے ان کوبڑی نزدیک سے دیکھا ہے اوران کی کرپشن بھی دیکھی ہے۔

یہ پارٹیاں تو آئندہ اقتدار کا سوچیں بھی نہیں۔انھوں نے کہا کہ اب تک اس ملک میں اساتذہ، ڈاکٹر، پولیس اورپٹواری پر سیاست ہوتی رہی اور پی ٹی آئی کی صوبائی حکومت نے سیاست دانوں پر یہ تمام راستے بند کردئیے ہیں۔ تمام ملازمتیں این ٹی ایس کے ذریعے میرٹ پر اہل لوگوں کودی جارہی ہیں تاکہ صوبے کے قابل نوجوان آگے بڑھیں اور صوبے کی خدمت کریں۔ملک کو بڑے بڑے چیلنجز کا سامنا ہے ہمیں برائیوں کی قوتوں کے خلاف اپنی صف بندیاں کرنی ہیں۔

نئے پاکستان کیلئے ہر کسی کواپنی استعداد کے مطابق ذمہ داری نبھانی ہے موجودہ حکومت جب اقتدار میں آئی تو ہمیں کئی چیلنجز کا سامنا تھا، ادارے تباہ حال تھے برائی کی قوتیں طاقتور تھی لیکن موجودہ حکومت نے برائیوں کو جڑ سے اکھاڑنے کے علاوہ اداروں کی تعمیر نو کاآغاز کرکے صوبے کو ترقی کے راہ پر گامزن کیا۔ تعمیر کے اس عمل میں میڈیا بھی شراکت دار ہے انہوں نے کہا کہ معاشرتی برائیوں کی حوصلہ شکنی کل وقتی ذمہ داری ہے یہ ایک مشکل کام بن جاتا ہے جب برائی کی قوتیں سٹیٹس کو کے نظام سے قوت حاصل کرتی ہو ں موجودہ حکومت کا ایجنڈا بھی سٹیٹس کو کی قوتوں کے خلاف نمبر دآزما ہونا تھا اسلئے ہم نے سیاسی عزم دکھایا۔

عوامی فلاح پر ہونے والی شرمناک سیاست کا خاتمہ کیا اور اداروں کو سیاست سے پاک کر کے عوام کو ریلیف دینے کے کام پر لگالیا۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ صحافت ایک مقدس پیشہ ہے اورریاست کا چوتھا ستون ہونے کے ناطے صحافیوں پر کافی ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں اسلئے صحافی برادری اپنی سماجی ذمہ داریوں کو سمجھ کر صحافتی ا قدار کی سر بلندی کیلئے جستجو کریں۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ رائے عامہ قائم کرنے میں میڈیا کا بہت اہم رول ہوتا ہے اسلئے وہ حقیقت کی تہہ تک پہنچ کر واقعات کی پیشہ ورانہ تصویر کشی کریں ۔ وقت آگیا ہے کہ صحافی برادری نہ صرف لوگوں کی شعوری بیداری کی ذمہ داری نبھائیں بلکہ انہیں حق اور باطل میں تمیز بھی کرنا ہوگا ۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ صوبائی حکومت تنقید برائے اصلاح پر یقین رکھتی ہے اور صحافتی برادری کی جانب سے گڈگورننس کے حوالے سے مثبت تجاویز کا خیر مقدم کرتی ہے پرویز خٹک نے کہا کہ صوبائی حکومت صحافیوں کی مالی مشکلات سے آگاہ ہے اور یہی وجہ ہے کہ پچھلے چار سالوں میں صحافیوں کی فلاح و بہبود کیلئے ٹھوس اقدامات کئے گئے ہیں اور سب سے بڑھ کر آج کی میڈیا کالونی کی افتتاحی تقریب اس بات کی گواہ ہے کہ صوبائی حکومت کس طرح اپنے وعدوں کو عملی جامہ پہناتی ہے۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ صوبائی حکومت کا آئین کے مطابق جتنا بھی عرصہ باقی ہے اس میں ہماری کوشش ہوگی کہ صحافی برادری کیلئے بے مثال اقدامات کو یقینی بنایا جائے۔ وزیراعلیٰ نے اس موقع پر نوشہرہ پریس کلب کے صدر مشتاق پراچہ کی طرف سے صحافی برادری کیلئے کی گئی کاوشوں کو بھی سراہا اور یقین دہانی کرائی کہ میڈیا کالونی میں صوبائی حکومت تمام تر سہولیات فراہم کرے گی۔ وزیراعلیٰ نے پریس کلب نوشہرہ کے صدر مشتاق پراچہ کو اپنی برادری کی حقیقی نمائندگی کرنے اور ضلع کی ترقی اور عوامی شکایات سے حکومت کو آگاہ کرنے پر ان کی کارکردگی کو سراہا۔