بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / پشاور میں ڈینگی حملوں کی روک تھام حکمت عملی طے

پشاور میں ڈینگی حملوں کی روک تھام حکمت عملی طے

پشاور۔ٹاؤن تھری کی حدود میں ڈینگی کے بڑھتے ہوئے حملوں کی روک تھام کیلئے چاروں ٹاؤنز نے ایکا کرتے ہوئے ایک دوسرے سے تکنیکی معاونت کے ساتھ افرادی قوت کی فراہمی پر بھی اتفاق کر لیا ہے ٗ پشاور کے دیگر ٹی ایم ایز ٹاؤن تھری کے ساتھ مل کر ڈینگی کے تدارک کیلئے مشترکہ جدوجہد کرینگے اس حوالے سے گزشتہ روز سیکرٹری بلدیات جمال الدین کی صدارت میں پشاور کے چاروں ٹاؤنز کے ناظمین اور ٹی ایم اوز کا اجلاس منعقد ہوا جس میں سیکرٹری لوکل کونسل بورڈ خضر حیات نے بھی شرکت کی ۔

اجلاس میں ٹاؤن تھری کی حدود میں واقع تہکال میں ڈینگی کے حملوں اور اب تک کے اقدامات پر غور کیا گیا اجلاس میں ناظم ٹاؤن ٹو فرید اللہ خان کافور ڈھیری نے کہا کہ ہمیں ڈینگی کی صورت میں قدرتی آفت کا سامنا ہے یہ مسئلہ صرف ایک علاقے یا ٹی ایم اے کا نہیں ہے ہم سب کو ڈینگی سے نمٹنے کیلئے یک جان ہو کر مشترکہ جدوجہد کرنا ہوگی انہوں نے اجلاس میں تجویز دی کہ وہ ٹاؤن تھری کو فوگ سپرے سمیت دیگر مشینری کے ساتھ صفائی عملہ بھی فراہم کرینگے دیگر ناظمین کو بھی اس کی تقلید کرنی چاہئے۔

اس موقع پر سیکرٹری بلدیات نے فرید اللہ خان کافور ڈھیری کی تجاویز کو ٹھوس قرار دیتے ہوئے ٹاؤن ون اور ٹاؤن فور کے ناظمین کو بھی ٹاؤن تھری کی تکنیکی معاونت کے ساتھ اسے افرادی قوت کی فراہمی کی بھی ہدایت کی سیکرٹری بلدیات نے چاروں ٹاؤن ناظمین کو ہدایت کی کہ وہ ماہانہ سطح پر اپنے ٹاؤنز میں اجلاس بلایا کریں اور مسائل کو ٹی ایم اے کی سطح پر ہی حل کیا جائے ۔دوسری جانب صوبائی دارالحکومت کے71مزید رہائشیوں میں ڈینگی کی تصدیق ہو گئی ہے جس کے بعد وائرس میں مبتلا افراد کی تعداد 576تک پہنچ گئی ہے ۔

اب تک 3490افراد کے خون کی سکریننگ کی گئی ہے خیبر ٹیچنگ ہسپتال میں اس وقت 104مریض داخل ہیں پشاور کے علاقے تہکال میں محلہ گجراں چنداں ٗ محلہ داؤدزئی ٗ پشتہ خرہ بالا میں کندے چاٹو پمپ اور ورسک روڈ سے ڈینگی سے متاثرہ افراد مسلسل رپورٹ ہو رہے ہیں تاہم حکومت اور متعلقہ اداروں کی جانب سے تاحال کوئی ٹھوس اقدامات نہیں کئے گئے ۔