بریکنگ نیوز
Home / شوبز / سنی لیون نے مودی، ٹرمپ اور اوباما کو بھی پیچھے چھوڑ دیا

سنی لیون نے مودی، ٹرمپ اور اوباما کو بھی پیچھے چھوڑ دیا


بولی وڈ اداکارہ سنی لیون ہمیشہ ہی خبروں میں رہتی ہیں، کبھی وہ اپنے آئٹم سانگ کی وجہ سے تو کبھی وہ دیگر لوگوں کی جانب سے تنقید کا نشانہ بنائے جانے کی وجہ سے، لیکن اس بار وہ مختلف حوالے سے خبروں کی زینت بنیں۔

بھارت کی جنوب مغربی ساحلی ریاست کیرالہ میں سنی لیون کا لوگوں نے اس بار ایسا استقبال کیا، جو آج تک وزیر اعظم نریندر مودی یا دیگر کسی سیاستدان کا نہیں کیا گیا۔

ہوا یوں کہ سنی لیون ریاست کیرالہ کے شہر کوچلی میں ایک نئے اسمارٹ فون (فون 4) کی تشہیر کے حوالے سے طے پروگرام میں شرکت کے لیے پہنچیں تو لوگوں کا سمندر ان کے استقبال کے لیے امڈ آیا۔

سنی لیون کی جانب سے 17 اگست کو اتنی بڑی تعداد میں لوگوں کی جانب سے استقبال کیے جانے کی تصاویر اور ویڈیوز ٹوئیٹ کیے جانے کے بعد پہلے پہل تو لوگوں کو یقین ہی نہیں آیا، لیکن جلد ہی دوسرے اکائونٹس سے بھی تصاویر اور ویڈیوز ٹوئیٹ کی جانے لگیں، اور بھارتی میڈیا بھی یہ مناظر دکھانے پر مجبور ہوگیا۔

تصاویر اور ویڈیوز میں دیکھا جاسکتا ہے، لوگوں کی بہت بڑی تعداد نے سنی لیون کی کار کو گھیر رکھا ہے، اور ان کی گاڑی پھنس کر رہ گئی۔

کوچلی میں اپنے شاندار استقبال پر جہاں سنی لیون خود خوش دکھائی دیں، وہیں اور خواتین اور مرد بھی ان کے ایسے شاندار استقبال پر مسرور نظر آئے۔

کئی لوگوں نے سنی لیون کے استقبال کی تصاویر کے ساتھ نریندر مودی اور راہول گاندھی سمیت دیگر سیاستدانوں کی کیرالہ آمد کی تصاویر بھی شیئر کرکے ان کا اداکارہ کے استقبال سے موازنہ کیا۔

یہی نہیں سنی لیون کے اس تاریخی استقبال کا موازنہ ڈونلڈ ٹرمپ اور براک اوباما کے صدارتی خطاب کے دوران لی گئی تصاویر سے بھی کیا گیا۔

لوگوں کا خیال تھا کہ ایسا تاریخی استقبال کیرالہ میں نہ تو نریندر مودی کا ہوا، اور نہ ہی راہول گاندھی سمیت دیگر کسی اور سیاستدان کا، جب کہ ڈونلڈ ٹرمپ اور براک اوباما کی تقریر کے دوران بھی لوگ کم تھے۔

اتنے بڑے استقبال پر جہاں سنی لیون اور دیگر کچھ افراد خوش دکھائی دیے، وہیں کچھ لوگ اس سے خفا بھی نظر آئے، کیوں کہ اتنی بڑی تعداد میں لوگوں کی روڈوں پر موجودگی سے کوچلی شہر کی ٹریفک کئی گھنٹوں تک جام رہی۔