بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / نیشنل بینک کے صدر نیب کے سامنے پیش

نیشنل بینک کے صدر نیب کے سامنے پیش

لاہور۔نیشنل بینک کے صدر سعید احمد اور انکے قریبی ساتھی شوگر ملز ایسوسی ایشن کے سابق چیئرمین جاوید کیانی نیب کی تحقیقاتی ٹیم کے سامنے پیش ‘،ڈی جی نیب کی سربراہی میں پانچ رکنی ٹیم نے دونوں شخصیات سے سپریم کورٹ کے پانامہ فیصلے کے تناظر میں شریف خاندان اور اسحق ڈار بارے آمدنی سے زائد جائیداد رکھنے ، ایون فیلڈ کے فلیٹس ، مبینہ منی لانڈرنگ ،حدیبیہ پیپر ملز اور اس سے متعلقہ دیگر سوالات کئے ۔

تفصیلات کے مطابق نیشنل بینک کے صدر سعید احمد کو سپریم کورٹ کی طرف سے بنائی گئی جی آئی ٹی میں طلب کیاگیا تھا جبکہ وہ گزشتہ روز نیب کے رو برو بھی پیش ہوئے۔بتایا گیا ہے کہ نیب کی پانچ رکنی ٹیم نے نیشنل بینک کے سربراہ سے کئی گھنٹے تک سوالات کئے جبکہ اس موقع پر جے آئی ٹی رپورٹ کی روشنی میں بھی پوچھ گچھ کی گئی ۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق جے آئی ٹی نے اپنی رپورٹ میں کہا تھاکہ سعید احمد کے پانچ بنک اکاؤنٹس کے ذریعے بھاری رقوم کی منتقلی کی گئی اور ان کے ذریعے موسیٰ غنی اور اسحق ڈار مستفید ہوتے رہے جبکہ ان کے بینک اکاؤنٹس سے ہجویری گروپ کو رقوم منتقل کی گئیں جہاں سے شریف فیملی کو قرضے دئیے گئے اور انہوں نے جو لاکھوں ڈالر بیرون ملک منتقل کیے وہ حدیبیہ پیپرز ملز کے کام آئے۔

رپورٹ کے مطابق سعید احمد کے بنک اکاؤنٹس سے اسحق ڈار کی کمپنیوں کو 76 لاکھ 20 ہزار ڈالر جبکہ تبسم اسحق ڈار کو 3 لاکھ 26 ہزار ڈال کے قرضے فراہم کیے گئے تھے۔جے آئی ٹی کے مطابق سعید احمد کے بینک اکاؤنٹس میں کل 1 کروڑ 15 لاکھ 45 ہزار 6 سو 83 ڈالر جمع کرائے گئے جو 98-1997 کے دوران کم ہو کر بیرون ملک منتقل ہونا شروع ہو گئے تھے۔علاوہ ازیں سعید احمد کے قریبی ساتھی اور شوگر ملز ایسوسی ایشن کے سابق چیئرمین جاوید کیانی بھی نیب کے طلب کرنے پر گزشتہ روز پیش ہوئے جن سے اسی تناظر میں سوالات کئے گئے ۔