بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / جعلی پیروں اورعاملوں پر پابندی کیلئے بل پیش

جعلی پیروں اورعاملوں پر پابندی کیلئے بل پیش

اسلام آباد۔ایوان بالا (سینیٹ ) ملک بھر میں جادو ٹونے کی روک تھام،کالے جادو اور جعلی پیروں وعاملوں پر پابندی کیلئے بل پیش کردیا گیا ، بل میں کالا جادو کرنے پر پابندی کی خلاف ورزی کرنے والے کیلئے 2سے 7سال تک قید اور2لاکھ روپے تک جرمانہ تجویز کیا گیا ہے ، بل کے تحت جادو ٹونے سے متعلق کتابچے ،بل بورڈز ، وال چاکنگ ، سائن بورڈ، وزٹنگ کارڈز، سوشل میڈیا، پرنٹ والیکٹرانک میڈیا پر تشہیر پر مکمل پابندی ہوگی۔

چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی نے بل کو مزید غوروخوض کیلئے متعلقہ قائمہ کمیٹی کو بھجوادیا ۔پیرکو سینیٹ اجلاس میں مسلم لیگ (ن) کے سینیٹر چوہدری تنویر خان نے جادو گری کی ممانعت کا بل ’’جادو گری کی ممانعت کا بل 2017‘‘پیش کرتے ہوئے کہا کہ بدقسمتی سے ملک میں جادوٹونے سے بہت سے لوگ متاثر ہورہے ہیں ، خاص طور ملک کا غریب طبقہ جعلی عاملوں اور پیروں کے جھانسے میں آجاتے ہیں ۔

بل کے مطابق ملک بھر میں جادو ٹونے کی روک تھام،کالے جادو پر پابندی اور جعلی پیروں وعاملوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی ۔ بل میں کالا جادو کرنے والے شخص کو کم از کم دو سال اور زیادہ سے زیادہ سات سال تک سزا اور پچاس ہزار روپے سے دو لاکھ روپے تک جرمانہ عائد کرنے کی تجویز دی گئی ہے ۔ بل میں جادو ٹونے سے متعلق اشیاء رکھنے پر تین ماہ قید اور25ہزار روپے جرمانہ تجویز کیا گیا ہے جبکہ قرآن پاک جیسی مقدس کتاب کا جادو ٹونے کیلئے استعمال پر عمر قید کی سزا تجویز کی گئی ہے ۔

بل میں تدفین کے بعد قبر کھولنے پر پابندی ہوگی جبکہ اس کا جرم مرتکب کرنے والے کو سات سال قید اور ایک لاکھ روپے جرمانہ تجویز کیا گیا ہے ۔ اسی طرح بل میں مسمار شدہ قبر میں کالا جادو کرنے پر پابندی ، کسی قبر یا مردے کے اوپر نہانے پر پابندی ، کفن یا تابوت کی چوری پر سزائیں تجویز کی گئی ہیں ۔ بل میں جادو ٹونے سے متعلق اشتہارات ، اشاعت اور کتابیں بیچنے یا خریدنے پر پابندی ہوگی جس کی خلاف ورزی پر ایک سال قید اور جرمانہ کیا جائے گا ۔

بل کے تحت جعلی اور جادو ٹونا کرنے والے عامل کو تحفظ دینے والے کو بھی سزا اور جرمانہ کیا جا سکے گا ۔ حکومت کی جانب سے بل کی عدم مخالفت پر چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی بل متعلقہ قائمہ کمیٹی کوبھجوا دیا ۔