بریکنگ نیوز
Home / کھیل / رومن رینز کی مسلسل شکستوں کی وجہ سامنے آگئی

رومن رینز کی مسلسل شکستوں کی وجہ سامنے آگئی

ریسل مینیا 33 میں انڈرٹیکر کو شکست دینے کے بعد رومن رینز کے کیرئیر میں اگرچہ ترقی ہوئی لیکن یہی بات شائقین کی نظروں میں ان کی ناپسندیدگی کی وجہ بن گئی اور ڈبلیو ڈبلیو ای نے ریسلر کو دوبارہ مقبول بنانے کے لیے منفرد ہی حکمت عملی کو اپنالیا ہے۔

اگر آپ ڈبلیو ڈبلیو ای کے ایونٹس شوق سے دیکھتے ہیں تو ہوسکتا ہے آپ نے غور کیا ہو کہ ریسل مینیا 33 میں انڈر ٹیکر کو شکست دینے کے بعد سے رومن رینز کسی بھی بڑے ایونٹ میں کوئی میچ جیت نہیں سکے ہیں۔

جو ان جیسے ریسلر کی صلاحیت کو دیکھتے ہوئے کافی حیرت کی بات ہے مگر درحقیقت یہ تو ڈبلیو ڈبلیو ای کی انہیں ‘دی’ جانے والی سزا ہے۔

جی ہاں واقعی ڈبلیو ڈبلیو ای کے خیال میں اس طرح کا تاثر رومن رینز کو ناپسند کرنے والے افراد کو ان کے حق میں کرنے میں مددگار ثابت ہوگا۔

مختلف رپورٹس کے مطابق پرستاروں کی جانب سے ایسی شکایات بہت سامنے آرہی تھیں کہ گزشتہ برسوں کے دوران رومن رینز کچھ زیادہ ہی میچز جیتے ہیں۔

مگر اب ڈبلیو ڈبلیو ای حکام کو توقع ہے کہ بڑے میچز میں ناکامی سے لوگوں کے اندر رومن رینز کے لیے ہمدردی میں اضافہ ہوگا۔

ڈبلیو ڈبلیو ای رومن رینز کو جان سینا کی جگہ لینے کے لیے تیار کررہا ہے مگر لوگوں کا ردعمل اس حوالے سے کچھ اچھا نہیں اور اب حکام کو لگتا ہے کہ ریسلر کو اکثر شکست سے دوچار دیکھ کر لوگوں کے خیالات کو بدلا جاسکتا ہے۔

کہا جارہا ہے کہ ڈبلیو ڈبلیو ای میں رومن رینز کی بڑے ایونٹس میں ایسی شکستوں کا سلسلہ ریسل مینیا 34 تک چلے گا۔

تاہم ریسل مینیا 34 میں رومن رینز ممکنہ طور پر بروک لیسنر کے مدمقابل آئیں گے اور یونیورسل چیمپئن شپ کو جیتنے میں کامیاب ہوں گے، تاہم فی الحال یہ منصوبہ ہے جس پر عملدرآمد ہوتا ہے یا نہیں، ابھی کہنا مشکل ہے۔

مگر ڈبلیو ڈبلیو ای کو توقع ہے کہ متعدد شکستوں کے بعد چیمپئن شپ میں کامیابی کے بعد رومن رینز کو پرستاروں کی جانب سے مثبت ردعمل ملے گا۔

واضح رہے کہ رومن رینز 3 بار ڈبلیو ڈبلیو ای ورلڈ ہیوی ویٹ چیمپئن رہ چکے ہیں۔