بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / خیبر پختونخوا میں سرمایہ کاروں کو راغب کرنے کیلئے تجاویز

خیبر پختونخوا میں سرمایہ کاروں کو راغب کرنے کیلئے تجاویز

پشاور ۔ حکومت خیبر پختونخوا کی مجوزہ ڈرافٹ سرمایہ کاری پالیسی کے بارے میں ماہرین ،ترقیاتی شراکت داروں اور چیمبر ٓاف کامرس اینڈ انڈسٹریز کے نمائندوں نے حکومت خیبر پختونخواکو بعض مفید تجاویز دی ہیں۔محکمہ منصوبہ سازی و ترقی حکومت خیبر پختونخوا نے منگل کے روز ڈرافٹ انویسٹمنٹ پالیسی آف حکومت خیبر پختونخواکو حتمی شکل دینے سے متعلق ایک۔ایک روزہ ورکشاپ کا انعقاد سرینا ہوٹل اسلام آباد میں گورننس اینڈ پالیسی پراجیکٹ کے تعاون سے کیا۔ مختلف سفارتی مشنز،سرکاری اداروں،انویسٹمنٹ ریسرچ انسٹی ٹیوشنز اور کارپوریٹ سیکٹر اور اکیڈیما کے نمائندوں نے بھی مذکورہ مشاورتی ورکشاپ میں شرکت کی۔ سیکرٹری محکمہ منصوبہ سازی و ترقی حکومت خیبر پختونخوا شہاب علی شاہ نے اس موقع پر اپنے خطبہ استقبالیہ میں کہا کہ صوبہ خیبر پختونخوا کو جغرافیائی مقام،قدرتی وسائل،سیاحت اور نوجوانوں سے متعلق تقابلی موازنے میں کئی فوائد اور امتیاز حاصل ہے جن سے مقامی اور بین الاقوامی سرمایہ کار استفادہ حاصل کرسکتے ہیں جس سے صوبے اور ملک کی ترقی و خوشحالی،ریونیو میں اضافے اور روزگار کے مواقع پیدا کرنے میں بے حد مدد اور معاونت ملے گی۔

اس موقع پر ڈرافٹ پالیسی کے مختلف حصوں پر تفصیلی غور و خوض کے لئے شرکاء کو چھ ورکنگ گروپس میں تقسیم کر کے تفصیلی اور بھرپور بحث مباحثہ کیا اور ہر ایک گروپ نے صوبے میں سرمایہ کارو ں کو راغب کرنے کے لئے مذکورہ ڈرافٹ پالیسی کو مزید بہتر بنانے کے لئے مفید تجاویز دیں۔شرکاء نے اس موقع پر ایسی پالیسی تشکیل دینے کی سفارش کی جو دفاعی سرمایہ کاری پالیسی کی بجائے خیبر پختونخوا تقابلی فوائد کی حوصلہ افزائی کر سکے۔ ورکشاپ میں بزنس کمیونٹی نے اس امر کو سراہا کہ صوبے کی 70سالہ تاریخ میں حکومت کی جانب سے یہ پہلی سنجیدہ کوشش ہے جس سے صوبے کے اقتصادی مسائل کے حل اور صوبے میں سرمایہ کاروں کو راغب کرنے میں مدد ملے گی ۔اس سرمایہ کاری پالیسی سے سرمایہ کاروں کو قانونی تحفظ فراہم ہوگا جبکہ قومی اور بین الاقوامی سرمایہ کاروں کو حکمت عملی کے رہنما اصول اور سہولیات بھی فراہم فراہم گی۔ اس سرمایہ کاری پالیسی پر عمل درآمد سے بہت سے فوائد متوقع ہیں ۔

کیونکہ اس کی تیاری میں کابینہ کی منظوری سے پہلے ہر شعبہ کو پالیسی کی ڈرافنٹنگ اور حتمی شکل دینے میں پورا پورا موقع دیا گیا۔ اس سے ہائیڈل،انرجی،پاور،معدنیات،زراعت،انفارمیشن ٹیکنالوجی اور صنعتوں سمیت تمام شعبے خیبر پختونخوا کے عوام کے فائدے کیلئے بھرپور طریقے سے استعمال ہوں گے۔سیکرٹری محکمہ پلاننگ و ڈیویلپمنٹ نے اپنے اختتامی کلمات میں کہا کہ مختلف شعبوں کے ماہرین اور نمائندوں کو پالیسی کی تشکیل میں شامل کیا جائے گا اور اسے کابینہ اور صوبائی اسمبلی کو پیش کیا جائے گا تاکہ اسے اسمبلی ایکٹ بنایاجاسکے۔