بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / خیبر پختونخوا کے سیاحی مقامات پر کرشنگ کا کام بند کرنیکی ہدایت

خیبر پختونخوا کے سیاحی مقامات پر کرشنگ کا کام بند کرنیکی ہدایت


پشاور:وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کے مشیر برائے اعلیٰ تعلیم مشتاق احمد غنی کی زیر صدارت منگل کے روزایک اجلاس پشاورمیں منعقد ہوا جس میں وزیر اعلیٰ کے مشیر برائے سی اینڈ ڈبلیوں اکبر ایوب سمیت محکمہ معدنیات،محکمہ ماحولیات،قانون اور سی اینڈ ڈبلیوں کے اعلیٰ افسران نے شرکت کی۔اجلاس میں صوبہ خیبر پختونخوا میں سٹون کرشنگ مشین کی انسٹالیشن اور رجسٹریشن کے امورپر بات چیت ہوئی۔

مشتاق احمد غنی ہے کہا کہ آبادی والے علاقوں،ٹورسٹ سپاٹس خوبصورت نظارے والے مقامات پر کرشنگ کا کام بند کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ کرشنگ کی آلودگی اور بلاسٹنگ کی آوازو ں سے عوام متاثر ہورہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ایبٹ آباد اور دیگر کرشنگ مقامات پر پتھروں کے نکالنے کے لئے بارودی مواد استعمال ہوتا ہے جس کی آواز دور دور تک سنائی دیتی ہے او ر بلاسٹنگ سے زمین ہل جاتی ہے جس پر لوگ گھروں سے باہر نکلنے پر مجبور ہوجاتے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ کرشنگ مشین کی دھول سے ماحول متاثر ہوتا ہے اور علاقے کی خوبصورتی میں بھی کمی آجاتی ہے۔سیکرٹری معدنیات نے کہا کہ بہت جلد ایک کمیٹی تشکیل دی جائے گی جو صوبے کے مختلف علاقوں جہاں پر کان کنی اور کرشنگ کا کام ہوتا ہے ان کا معائنہ کریگی ۔انہوں نے کہا کہ چائنیز کمپنیوں نے لیز پر 10کرشرز مشینیں لگائی تھی جن کی اطلاع ملتے ہی متعلقہ ڈیپارٹمنٹ نے وہاں کام بند کروایا۔

اس موقع پرمشیر مواصلات اکبر ایوب نے کہا کہ جو لوگ قانون کی خلاف ورزی کر رہے ہیں ان کے ساتھ سختی سے نمٹا جائے گا اور قانون کے مطابق ان مسائل کاحل نکالا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ جہاں پر کرشنگ کا کام جاری ہو وہاں پانی کاچھڑکاؤ یا دوسرے ذریعے سے اس سے خارج ہونے والی دھول کو کنٹرول کیا جائے تاکہ ماحول صاف رہے اور عوام کو مشکلات نہ ہوں۔