بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / ’ر ا‘اور تحریک طالبان پاکستان کے درمیان گہرے تعلقات ہیں‘بھارتی اخبار

’ر ا‘اور تحریک طالبان پاکستان کے درمیان گہرے تعلقات ہیں‘بھارتی اخبار

نئی دہلی۔بھارتی اخبار ہندوستان ٹائمز نے کالعدم ٹی ٹی پی اور راہ کے تعلقات کو تسلیم کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکی وزیر دفاع جیمس میٹسر واں ہفتے اپنے دورے کے دوران بھارت پر ٹی ٹی پی اور راکے درمیان بڑھتے ہوئے تعلقات کو کم کرنے کے حوالے سے دباؤ ڈالیں گے کیونکہ اگر را نے ٹی ٹی پی سے تعلقات کم نہ کئے تو یہ بھارت کے لئے بہت بڑا خطرہ ثابت ہو سکتا ہے ۔ بھارتی اخبار ہندوستان ٹائمز نے بھارت کا مکروہ چہرہ دنیا کے سامنے کھول کر رکھ دیا ہے جس میں ہندوستان ٹائمز نے خود کالعدم ٹی ٹی پی اور را کے درمیان تعلقات کو تسلیم کرتے ہوئے کہا ہے کہ ٹی ٹی پی کے ترجمان احسان اللہ احسان کی گرفتاری کے بعد بھارتی خفیہ ایجنسی رااور کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے درمیان تعلقات منظر عام پر آ گئے ہیں ۔

اخبار نے مزید لکھا ہے کہ را کی طرف سے کالعدم ٹی ٹی پی کی حمایت کم کرنے کے لئے امریکہ بھی بھارت پر دباؤ ڈالنے کے لئے امریکی وزیر دفاع جیمس میٹس کو بھارت بھیج رہا ہے جس میں جیمس میٹس وہ بھارت میں اس معاملے کو اٹھاتے ہوئے عسکری اور سیاسی قیادت سے بات کریں گے اور بھارت کو پیغام دیں گے کہ وہ ٹی ٹی پی کے ساتھ تعلقات کو کم کریں کیونکہ دونوں کے درمیان تعلقات کم کرنے کا مقصد پاکستان ایک اہم کارڈ سے دستبردار ہونا ہو گا ۔ اخبار میں مزید کہا گیا کہ جیمس میٹس کے ایجنڈے کا مقصد امریکہ کا پاکستانی موقف تسلیم کرنا ہے کیونکہ اگر ٹی ٹی پی سے راہ نے تعلقات کم نہ کئے تو یہ بھارت کے لئے بھی بہت بڑا خطرہ ثابت ہو سکتا ہے اور امریکہ نے بھی اب تسلیم کر لیا ہے کہ افغان امن میں پاکستان کا کردار اہمیت رکھتا ہے ۔

واضح رہے کہ امریکی وزیر دفاع جیمس میٹس نے افغانستان میں طالبان کے گھٹنے ٹیکنے پر پاکستان کے کردار کو سراہا ہے اور کہا کہ راہ کے ساتھ گٹھ جوڑ کے بارے میں احسان اللہ احسان کے بیان نے بھارت کو مشکل میں ڈال دیا ہے ٹی ٹی پی کا راکے ساتھ گٹھ جوڑ اشارہ کرتا ہے کہ بھارت پاکستان میں دہشتگردی کے لئے ٹی ٹی پی کو استعمال کر رہا ہے ۔