بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / ایک فرد کیلئے آئین میں ترمیم بادشاہت ہے، سراج الحق

ایک فرد کیلئے آئین میں ترمیم بادشاہت ہے، سراج الحق

لاہور۔ جماعت اسلامی کے امیر سینٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ حکومت نے اپنے مفاد میں الیکشن ریفارمز کرکے انتخابی عمل پر شب خون مارا ہے، قبل از وقت انتخاب سے حکمرانوں کو سیاسی شہادت کا موقعہ ملے گا،اسمبلیوں کو اپنی مدت پوری کرنی چاہیے،نااہل شخص کو سیاسی جماعت کا سربراہ بنانا توہین عدالت ہے‘، الیکشن بل فوری طور پر واپس ہونا چاہئے، ایک فرد کیلئے آئین میں ترمیم بادشاہت ہے، جمہوریت نہیں۔

منصورہ میں جماعت اسلامی کی مجلس عاملہ کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سینٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ الیکشن کسی ایک جماعت کا مسئلہ نہیں ہے، فوری انتخابات کے حوالے سے قومی اتفاق رائے کی ضرورت ہے ، موجودہ اسمبلیوں کو مدت پوری کرنا چاہیے مدت پورا کرنا آئین کا بھی تقاضا ہے،حکومتیں ختم کرکے قبل ازوقت شہادتوں کا موقع نہیں دینا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ آئین کی دفعہ باسٹھ ، تریسٹھ میں نااہل ہوئے شخص کو پارٹی سربراہ بنانا، سپریم کورٹ کے فیصلوں پر شب خون ہے۔

حکومت نے سینٹ میں انتخابی اصلاحات کے بل کو خود مشکوک بنادیا ہے، الیکشن بل فوری طور پر واپس ہونا چاہئے، ایک فرد کیلئے آئین میں ترمیم بادشاہت ہے، جمہوریت نہیں۔انہوں نے کہا کہ لائن آف کنٹرول پر صورتحال خراب ہے ہماری حکومت کی طرف سے بھارت کو وہ جواب نہیں مل دیا جارہا جو کہ دینا چاہیے ہماری حکومت کی پالیسی پس پسا ہے پالیسی کو تبدیل کرنے کی ضرورت ہے، روہنگیا کے مسلمانوں کے مسئلے پر بھی حکومت کو اپنا کردار ادا کرنا چاہیے، پاکستانی حکومت برما کے سفیر کو ملک بدر کرے اور سفارتخانے کو بند کرے۔