بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / گیس فراہمی پر حکم امتناعی ٗ شاہ فرمان کا امیر مقام کو چیلنج

گیس فراہمی پر حکم امتناعی ٗ شاہ فرمان کا امیر مقام کو چیلنج

پشاور۔خیبر پختونخوا کے وزیر اطلاعات و تعلقات عامہ اور آبنوشی شاہ فرمان نے کہا ہے کہ ن لیگ والوں کی عادت ہے کہ پہلے جھوٹ بولتے ہیں اور جب پکڑمیں آکر سزایافتہ ہوجاتے ہیں تو پھرفریاد کرتے ہیں کہ مجھے کیوں نکالا امیر مقام پی کے۔10 کوہ دامان میں گیس فراہمی پر حکم امتناعی لینے پر جھوٹ بول رہے ہیں ،امیر مقام کو چیلنج کرتا ہوں کہ وہ حکم امتناعی ثابت کریں اور بتائیں کہ کس عدالت اور کس جج نے حکم امتناعی جاری کیا ہے ورنہ جھوٹ بولنے پر امیر مقام کا حشر بھی اپنے قائد نواز شریف کی طرح ہوگا۔

یہاں سے جاری ایک بیان میں صوبائی حکومت کے ترجمان کاکہناتھا کہ امیر مقام نے الیکشن شیڈول جاری ہونے کے بعد کوہ دامان میں گیس فراہمی کا غیر قانونی افتتاح تو کر دیا لیکن اب فنڈز نہ ہونے کی وجہ سے صوبائی حکومت پر حکم امتناعی لینے کابہانہ بنا رہے ہیں لیکن وہ یاد رکھیں کہ وہ جھوٹ بول کر پی کے۔10کے عوام کو گمراہ نہیں کر سکتے ہیں اور عوام ان کی اس سازش کا شکار نہیں ہوں گے۔

عوام کو دھوکہ دینا اور سازشیں کرنا امیر مقام سمیت پوری مسلم لیگ کا شیوہ ہے لیکن اب ان لوگوں کے جھوٹ کادور ختم ہو گیا ہے اور اس بار یہ لوگ عوام کی آنکھوں میں دھول نہیں جھونک سکیں گے۔شاہ فرمان کا مزید کہنا تھا کہ پی کے۔10میں کوہ دامان میں اب پیسے نہ ہونے کی وجہ سے گیس فراہمی کے منصوبے میں دراڑیں پڑتے ہی امیر مقام نے حکم امتناعی کابہانہ بنالیا ہے ۔امیر مقام کو چیلنج کرتا ہوں کہ وہ عدالت سے حکم امتناعی کی دستاویزات پیش کریں ورنہ اب عوام ایک بار پھر جھوٹ بولنے اور دھوکہ دینے پر امیر مقام کا احتساب کریں گے۔

کوہ دامان میں گیس فراہمی کے معاملے پر امیر مقام نے ساڑھے تین سال تک صوبائی حکومت کے ساتھ مقدمہ لڑا اور اس وقت امیر مقام کو یہاں کے لوگوں کے حقوق کی کوئی پروا نہیں تھی ۔شاہ فرمان کا کہنا تھا کہ امیر مقام اپنے قائد کے حشر سے سبق سیکھیں جو عدالت سے نااہل قرارپانے کے بعدمجھے کیوں نکالا کی رٹ لگائے ہوئے ہیں اور عوام کے ساتھ جھوٹ بولنے اور دھوکہ دینے کی سیاست سے اجتناب کریں اور یاد رکھیں کہ خیبر پختونخوا سے اب ان کا احتساب شروع ہونے والا ہے جس سے وہ نہیں بچ سکیں گے۔