بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / قومی اسمبلی اجلاس میں بھی مرغی اور ٹماٹروں کی گونج

قومی اسمبلی اجلاس میں بھی مرغی اور ٹماٹروں کی گونج

اسلام آباد۔ بدھ کو ایم کیوایم کے رکن اسمبلی سید علی رضا نے نکتہ اعتراض پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں مسنگ پرسنز کے حوالے سے آوازیں آٹھائی جارہی ہیں اور محرم الحرام کے دنوں میں بھی شہریوں کو غائب کرنے کا سلسلہ جاری ہے ایم کیوایم کے اس وقت تک 125ارکان لاپتہ ہیں اہل تشیع طبقہ فکر کے مطابق ان کے 136 لوگ تاحال لاپتہ ہے جبکہ مدرسہ سے 2ہفتے قبل ترکش استاد کی فیملی کے ہمراہ اغواء کی کارروائی دنیاکے سامنے ہمارا منہ کالا کرنے کے لئے کافی ہے انہوں نے کہا کہ وفاقی وزیر داخلہ دوڑتے دوڑتے پہنچ جاتے ہیں لیکن لاپتہ افراد کے لئے کوئی اقدامات کیوں نہیں اٹھائے جارہے۔رکن اسمبلی شہاب الدین نے کہا کہ حلقے کے دو کالجز کی کچھ عرصہ قبل منظوری تو دی گئی تاہم معاملہ فاٹا سیکرٹریٹ اور وفاقی دارالحکومت کے درمیان پھنسے ہوئے ہیں۔

مجوزہ کالجز کیلئے اراضی مارکیٹ ویلج سے50 فیصد کم پر دینے کا میں پہلے ہی اعلان کرچکا ہوں،لیکن پھر بھی ڈھائی سال سے بنک میں رقم موجود ہونے کے باوجود تاحال کام آگے کیوں نہیں بڑھ رہا ہے،اس پر ایوان کو سخت ایکشن لیا جانا چاہئے۔ڈاکٹر نگہت شکیل رکن اسمبلی نے نکتہ اعتراض پر گفتگو کرتے ہووے کہا کہ کراچی میں گرین لائن اور اورنج لائن کے جاری منصوبوں کیلئے ابتدائی کام شروع کیا گیا تاہم سڑکوں کی کھدائی کرکے کام روک دیاگیا،جس سے عام شہریوں کی زندگی تباہ ہورہی ہے،کراچی جو ہماری معیشت کا حب ہے25 ارب کے پیکج کے اعلان کردہ منصوبوں کو بروقت مکمل کرنے کی ہدایات دی جائیں۔رکن اسمبلی شہزادی عمرزادی ٹوانہ نے کہا کہ وفاقی دارالحکومت میں لینڈ مافیا کے خوف سے عوام کو لوٹا جارہا ہے پر پرائیویٹ ہاؤسنگ اسکیم جو کہ بطور پرائیویٹ کمپنی کے بطور ایس ای سی پی میں رجسٹریشن کو حاصل کرتیں ہیں لیکن ہاؤسنگ سوسائٹی کے مروجہ قوانین پر عمل درآمد نہیں کیا جارہا۔

میاں عبدالمنان نے نکتہ اعتراض پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ منگل کو صحافیوں کے واک آؤٹ پر وزیرداخلہ کی عدم موجودگی کی صورت میں حال میں موجود اراکین میں سے ممبران پر مشتمل کمیٹی بنا دی جائے تاکہ وزیر داخلہ سے صحافی مطیع اللہ جان کو جان سے مارنے کی گزشتہ ہفتے کی جانے والی کوشش میں ملوث افراد کے خلاف کارروائی یقینی بنائی جاسکے۔رکن اسمبلی جمال الدین نے نکتہ اعتراض پر کہا کہ میرے حلقے میں مولانا فضل الرحمان کی برکت کے بعد علاقے میں سی پیک کے منصوبوں پر کام شروع ہوا ہے،جس سے لعاقے کی عوام کی قسمت بدلنے جاری ہے۔ایم کیو ایم کے رکن اسمبلی وسیم نے ایوان کی توجہ ملک میں حالیہ ٹماٹر کے جاری بحران کی طرف دلاتے ہوئے کہا کہ اس وقت ملک میں مرغی150روپے کلوجبکہ ٹماٹر250روپے فی کلو فروخت ہورہا ہے۔متعلقہ وریر کو ہدایات دی جائیں کہ وہ ٹماٹر کی مارکیٹ میں قلت کی وجوہات کے سبب بارے فوری ٹھوس اقدامات اٹھائیں۔رکن اسمبلی راؤ محمد اجمل نے ایوان میں کسانوں کی نمائندگی موجود ہے۔

جن سے وعدہ کیا گیا تھا کہ 14سے16 فیصد زرعی ٹیکس کو سنگل ڈیجٹ میں کردیا جائیگا،اس اعلان کو4ماہ گزر گئے لیکن مجوزہ حکومت اقدامات کا نوٹیفکیشن تاحال کسانوں کو نہیں پہنچا۔انہوں نے کہا کہ کسانوں کا مطالبہ ہے کہ زرعی ٹیکس کا بھی انڈسٹری کی طرز پر7فیصد ٹیکس تک لایا جائے۔جمشید دستی نے ایوان زیریں میں نکتہ اعتراض پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومتی اور وزراء کے بنچ خالی ہیں،ہمارا یا عوامی نمائندوں کا یہاں رونا فضول ہے،خود حکومتی رکن کہہ چکے وزیر انچارج کی موجودگی نہ موجودگی کا ہمیں کوئی پتہ نہیں چلتا۔رانا محمد اسحاق نے کہا کہ کسان طبقہ کیلئے ٹریکٹر سرکاری سکیم کے تحت فراہمی یقینی بنائی ۔