بریکنگ نیوز
Home / کھیل / گرین کیپس کے مضبوط اماراتی قلعے میں دراڑ پڑنے لگی

گرین کیپس کے مضبوط اماراتی قلعے میں دراڑ پڑنے لگی

دبئی:  گرین کیپس کے مضبوط اماراتی قلعے میں دراڑ پڑنے لگی، پاکستان کو یواے ای میں ناقابل شکست رہنے کا ریکارڈ بچانے کے لالے پڑ گئے، یہاں5سیریز جیتنے اور 4ڈرا کرنے والی ٹیم کو پہلی بار ناکامی کا خوف ستانے لگا، عالمی رینکنگ میں چھٹی پوزیشن برقرار رکھنے کیلیے بھی لازمی فتح درکار ہوگی،دوسری جانب آئی لینڈرز اپنی تاریخ کا پہلا ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ کامیابی کیساتھ یادگار بنانے کیلیے رنگانا ہیراتھ پر انحصار کریں گے۔

حسن علی کی شمولیت کا فیصلہ فٹنس ٹیسٹ کے بعد ہوگا،آئی لینڈرز کا اپنی تاریخ کے اولین ڈے نائٹ ٹیسٹ میں ہیراتھ پر انحصار، انجیلو میتھیوز بدستور باہر رہیں گے

انھیں دوسرے میچ میں بھی انجرڈ تجربہ کار کھلاڑی انجیلو میتھیوز کی خدمات سے محروم رہنا پڑے گا، میزبان ٹیم کمر کی تکلیف کا شکار حسن علی کی شمولیت کا فیصلہ فٹنس ٹیسٹ کے بعد کرے گی،گزشتہ روز کرکٹرز نے آئی سی سی اکیڈمی میں بھرپور پریکٹس سیشن سے لہو گرمایا، سینئر بیٹسمین اظہر علی کا کہنا ہے کہ پہلے میچ میں شکست پر مایوسی ہوئی، اب کم بیک کریںگے، ابوظبی میں ہدف قابل حصول تھا، ابتدا میں ہی زیادہ وکٹیں گرگئیں، غلطیوں سے سبق سیکھیں گے، دوسرے اسپنر کو کھلانے کا فیصلہ کنڈیشنز دیکھ کر ہوگا۔تفصیلات کے مطابق 2009میں سری لنکن ٹیم پر دہشت گرد حملے کے بعد پاکستان نے اپنی تمام ٹیسٹ سیریز یواے ای میں کھیلی ہیں، گرین کیپس اماراتی قلعے میں5سیریز اپنے نام کرنے اور 4ڈرا کرنے میں کامیاب ہوئے۔

آسٹریلیا، انگلینڈ اور جنوبی افریقہ جیسی مضبوط ٹیمیں بھی میزبان کیخلاف سرخرو نہیں ہوسکیں، سری لنکا سے دبئی ٹیسٹ میں 21رنز سے شکست کے بعد گرین کیپس کو پہلی بار ناکامی کا خوف ستانے لگا، دوسری اننگز میں بیٹنگ کے آسانی سے ہتھیار ڈال دینے کے بعد سیریز برابر کرنا ایک مشکل چیلنج نظر آرہا ہے، کپتان سرفراز احمد کو بھی اس بات کا احساس ہے،انھوں نے کہاکہ یواے ای میں ناقابل شکست رہنے کا ریکارڈ برقرار رکھنے کی پوری کوشش کرینگے۔ دوسری جانب پاکستان کو عالمی رینکنگ میں چھٹی پوزیشن برقرار رکھنے کیلیے بھی لازمی فتح درکار ہوگی،اگر میچ ڈرا بھی ہوا تو آئی لینڈرز ایک درجہ چھلانگ لگاتے ہوئے گرین کیپس کو ساتویں نمبر پر دھکیل دیںگے، پاکستان نے یواے ای میں ویسٹ انڈیز کے بعد برسبین میں آسٹریلیا کیخلاف بھی ایک ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ کا تجربہ کرلیا، البتہ سری لنکا اپنی تاریخ میں پہلی بار اس نوعیت کے مقابلے میں شرکت کا موقع کامیابی کے ساتھ یادگار بنانے کی کوشش کرے گا، اس مقصد کیلیے ابوظبی میں عمدہ بیٹنگ فارم کا مظاہرہ کرنے والے کپتان دنیش چندیمل کو رنگانا ہیراتھ سے بلند توقعات وابستہ ہوںگی۔

اسپنر نے میچ میں مجموعی طور پر 11وکٹیں اڑائیں اور دوسری اننگز میں 6شکار کرتے ہوئے پاکستانی بیٹنگ لائن کو 114تک محدود کرنے میں اہم کردار ادا کیا، سری لنکا کو دوسرے میچ میں بھی تجربہ کار کھلاڑی اینجیلو میتھیوز کی خدمات سے محروم رہنا پڑے گا،سابق کپتان پنڈلی کی انجری کا شکار ہیں، اطلاعات ملی ہیں کہ وہ فی الحال میدان میں اترنے کے قابل نہیں ہوسکے، میزبان ٹیم کمر کی تکلیف کا شکار حسن علی کی شمولیت کا فیصلہ فٹنس ٹیسٹ کے بعد کرے گی، دوسری صورت میں وہاب ریاض کو پلیئنگ الیون کا حصہ بنایا جاسکتا ہے، دبئی میں گزشتہ ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ میں پیسر نے ویسٹ انڈیز کیخلاف اچھی بولنگ کا مظاہرہ کیا تھا، پاکستان کو مزید کسی اسپنر کو آزمانے یا صرف یاسر شاہ اور پارٹ ٹائم سلو بولرز سے ہی کام چلانے کا فیصلہ بھی کرنا ہے۔

بیٹنگ لائن میں اظہر علی اور حارث سہیل امیدوں کا مرکز ہوںگے، گزشتہ روز گرین شرٹس نے بھرپور پریکٹس سیشن سے لہو گرمایا،فیلڈنگ ڈرلز خاص طور پر سلپ میں کیچز پر خصوصی توجہ دی گئی۔ٹریننگ کے دوران میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے سینئر بیٹسمین اظہر علی نے کہا کہ پہلے میچ میں شکست پر مایوسی ہوئی لیکن کرکٹ میں ایسا ہوجاتا ہے، ٹیمیں کم بیک بھی کرتی ہیں،ابوظبی میں ہدف قابل حصول تھا، مثبت ذہن کے ساتھ میدان میں اترے لیکن ابتدا میں ہی زیادہ وکٹیں گرنے کی وجہ سے سری لنکا نے ہمیں میچ میں آنے کا موقع نہیں دیا۔انھوں نے کہا کہ ہم اس شکست سے سبق سیکھیں گے کہ معاملات کنٹرول میں ہوں تو ہاتھ سے نہ نکلنے دیں،پہلی اننگز میں ہی برتری لینے کی پوزیشن میں تھے،ایسا کرلیتے تو چوتھی اننگز کھیلتے ہوئے ایسی صورتحال پیدا ہی نہیں ہوتی۔ایک سوال پر انھوں نے کہا کہ یاسر شاہ کے ساتھ دوسرے اسپنر کو کھلانے کا فیصلہ کوچ اور کپتان  کنڈیشنز دیکھ کر کریںگے لیکن ابوظبی میں پیسرز نے بھی وکٹیں لی ہیں،ٹاس ہار جائیں تو پہلی اننگز میں فاسٹ بولرز کی ضرورت پڑ سکتی ہے۔