بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / نوبل انعام جوہری ہتھیاروں کے خاتمہ مہم کے نام

نوبل انعام جوہری ہتھیاروں کے خاتمہ مہم کے نام

اوسلو ۔ امن کا نوبل انعام دنیا میں ایٹمی ہتھیاروں کے خاتمے کے لیے چلائی جانے والی عالمی مہم کے نام رہا ۔ناروے کی نوبل کمیٹی کے مطابق 2017 کا نوبل امن ایوارڈ ’انٹرنیشنل کمپین ٹو ابولش نیوکلئیر ویپنز (جوہری ہتھیاروں کے خاتمے کی بین الاقوامی مہم )‘ کو دیا جائے گا۔انٹرنیشنل کمپین ٹو ابولش نیوکلئیر ویپنز ( آئی سی اے این) دنیا کے 100 ممالک کی غیرسرکاری تنظیموں پر مشتمل ہے اور جیسا کہ اس کے نام سے ہی ظاہر ہوتا ہے کہ اس کا مقصد دنیا سے جوہری ہتھیاروں کا خاتمہ ہے۔

اس مہم کی ابتدا آسٹریلیا سے ہوئی تاہم اسے باضابطہ طور پر 2007 میں آسٹریا کے دارالحکومت ویانا سے شروع کیا گیا۔ نوبل کمیٹی نے امن ایوارڈ کے لیے آئی سی اے این کے نام کا اعلان کرتے ہوئے خبردار کیا کہ جوہری تنازع کا خطرہ پہلے سے بہت زیادہ بڑھ گیا ہے۔10 دسمبر کو ناروے کے دارالحکومت اوسلو میں منعقدہ تقریب میں امن ایوارڈ اور اس کے ساتھ 11 لاکھ ڈالر کی انعامی رقم آئی سی اے این کے نمائندوں کو دی جائے گی۔ نوبل کمیٹی نے کہا کہ آئی سی اے این نے دنیا کی توجہ جوہری ہتھیاروں کے تباہ کن اثرات کی طرف مبذول کرائی۔

نوبل کمیٹی کے سربراہ بیرٹ ریس اینڈرسن نے کہا کہ ہم ایسی دنیا میں سانس لے رہے ہیں جہاں زیراستعمال ایٹمی ہتھیاروں کا خطرہ پہلے کے مقابلے میں بہت زیادہ بڑھ گیا ہے۔ان دنوں دو ایٹمی ممالک امریکا اور شمالی کوریا کے درمیان شدید کشیدگی پائی جاتی ہے جب کہ عالمی برادری کے ساتھ ایران کا ایٹمی معاہدہ بھی ٹوٹنے کا خطرہ ہے۔ ایسے میں نوبل کمیٹی نے دنیا میں ایٹمی ہتھیاروں کے خاتمے کے موقف کو مضبوط کرنے کا فیصلہ کیا۔ قبل ازیں یہ کہا جارہا تھا کہ اس سال یہ انعام شامی رضا کار تنظیم ’وائٹ ہیلمٹ‘ کو دیا جا سکتا ہے۔