بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / دھرنے کا اعلان کیا تو اسلام آباد میں جگہ نہیں ملے گی ٗ فضل الرحمان

دھرنے کا اعلان کیا تو اسلام آباد میں جگہ نہیں ملے گی ٗ فضل الرحمان

نوشہرہ۔جمعیت علماء اسلام پاکستان کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ فاٹا کے مستقبل کو ٹھیک کرنا ہے تو دھرنے نہ دوں اگر جمعیت علماء اسلام نے دھرنے کااعلان کیا تو اسلام آباد میں جگہ نہیں ملے گی پاکستان کو ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت سیکولرذہنیت رکھنے والے عناصر کے حوالے کرنے کی کوشش کی جارہی ہے کبھی حقوق نسواں کے نام پر تو کبھی ختم نبوت کے نام پر توہین رسالت پر حملے کئے جارہے ہیں ۔

جمعیت علماء اسلام کے ہوتے ہوئے ہر سازش ناکام بنائیں گے موجودہ صوبائی حکومت نے صوبے کے تمام اداروں کا بیڑہ غرق کرکے رکھ دیا ہے سرکاری سکولوں کے اساتذہ کی تنخواہوں کی مد میں خزانے میں پیسے نہیں اور دوسری طرف صوبے کے مساجد میں خطیبوں کو تنخواہوں کا لالچ دے کر استعماری قوتوں اور مغربی ایجنڈے کی تکمیل کی خاطر خریدنے کی ناکام کوشش کی جارہی ہے لیکن مساجد میں بیٹھے منبر ومحراب کے رکھوالے استعماری قوتوں اور مغربی ایجنڈے کی تکمیل کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔

کیونکہ خیبرپختونخوا کے غیور علماء کو موجودہ صوبائی حکومت اور وزیراعلیٰ کی نیت کا پتہ ہے کیونکہ موجودہ حکومت کو عوام نے منتخب نہیں کیا بلکہ کوئی لایا ہے جوکسی کام کے بھی نہیں اگر وہ اس نے کچھ بہتر کیا ہے تو وہ چوہوں سے جنگ اور چین کے ساتھ گدھوں کا کاروبار دوسروں کو ڈینگی برداران کے طعنے دینے والے خود ڈینگی پر قابو پانے میں بری طرح ناکام ہوگئے کچھ عناصر فاٹا کو خیبرپختونخوامیں ضم کرنے پر بضد ہیں پتہ نہیں کہ یہ لوگ اس مسئلے میں فاٹا کے چاچا ماموں کیوں بنے ہوئے ہیں؟

فاٹا کا مسئلہ اتنا سنگین نہیں جتنا بنایا جارہا ہے اور فاٹا کا صوبے میں انضمام پر شور مچانے والوں کے اپنے ایجنڈے ہیں ان خیالات کااظہارانہوں نے نوشہرہ فاروق سٹیڈیم میں سابق ایم پی اے اور مفتی محمود کے دست راست مولانا مجاہد خان الحسینی کی یاد میں منعقدہ مجاہد ملت کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا کانفرس سے سابق وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا اکرم خان درانی، صوبائی امیر مولانا گل نصیب خان، جمعیت علماء اسلا م کے رہنما امجد خان لاہوری، صوبائی سیکرٹری اطلاعات حاجی عبدالجلیل جان، سابق صوبائی وزیر تعلیم مولانا فضل علی حقانی نے بھی خطاب کیا ۔

مولانا فضل الرحمان نے اپنے خطاب میں کہا کہ امت مسلمہ ایک آزمائش سے گزر رہی ہے کشمیر، فلسطین،برما، شام، عراق میں مسلمانوں کا قتل عام کیاجارہا ہے افغانستان جل رہا ہے اور افغانستان میں بھڑکنے والے شعلوں سے پاکستان بھی متاثر ہورہا ہے ہم پاکستان کی آزادی پر کسی قسم کا کوئی سمجھوتہ کرنے کو تیار نہیں برابری کی بنیاد پر تعلقات کیلئے تیار ہیں لیکن کی ڈیکٹیشن تسلیم نہیں کریں گے انہوں نے مزید کہا کہ اگر ہندوستان پاکستان کو اور پاکستان افغانستان کو اپنے زیر اثر لانا چاہتا ہے اور ایران اگر خلیجی ممالک کو قبضہ کرنا چاہتا ہو تو اس سے خطہ ترقی کی بجائے تنزلی کی طرف گامزن ہوگا ۔