بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / پی ٹی آئی اراکین اسمبلی اپنی ہی حکومت کیخلاف سراپا احتجاج

پی ٹی آئی اراکین اسمبلی اپنی ہی حکومت کیخلاف سراپا احتجاج

پشاور۔خیبر پختونخوا اسمبلی میں تحریک انصاف کے جنو بی اضلا ع سے تعلق رکھنے والے اراکین اسمبلی نے تیل و گیس اور بجلی کی رائلٹی نہ ملنے پر احتجا ج کر تے ہو ئے اپنی ہی حکومت کے خلا ف دھر نا دینے کی دھمکی دیدی ٗڈپٹی سپیکر کی جانب سے با ت کر نے کا مو قع نہ دینے پر کرکے سے ایم پی اے گل صاحب خان ڈیسک پر کھڑے ہو کر احتجاج کیا پیر کے روز صوبائی اسمبلی کے اجلاس کے دوران جب نکتہ اعتراض پر گل صاحب خان کو اپنے علاقے کے مسائل اور رائلٹی نہ ملنے پر با ت کر نے کا موقع نہ ملا تووہ احتجاجاً ڈیسک پر کھڑے ہوگئے ۔

دیگر ایم پی ایز کی مداخلت پر ڈپٹی سپیکر نے انہیں بولنے کا موقع دیاجس کے بعد گل صاحب خان نے کہا کہ صوبائی حکومت کو ہر سال بجلی ٗتیل اور گیس کی مد میں وفاقی حکومت کی جانب سے اربوں روپے کی ادائیگی کی جا تی ہے لیکن صوبائی حکومت فنڈ ملنے کے باوجود فارمولے کے تحت اس کا 10 فیصد متعلقہ اضلاع کو نہیں دے رہا اور اس فنڈ کو صوبے کے دیگر اضلاع میں ترقیاتی کاموں کیلئے استعمال کیا جا رہا ہے جو ہمارے ساتھ زیادتی ہے۔

اس موقع پر مشیر برائے جیل خانہ جات اور کرک سے منتخب ایم پی اے قاسم خٹک بھی صوبائی حکومت کے خلاف پھٹ پڑے اورکہنے لگے کہ ان کے علاقے میں 55کروڑ کے منصوبے التواء کا شکار ہیں جس کی بڑی وجہ یہ ہے کہ رائلٹی فنڈ سے کوہاٹ ڈویژن کو ادائیگی نہیں ہوتی تحریک انصاف کے محمود جان نے انکی ہاں میں ہاں ملاتے ہوئے کہا کہ گزشتہ دو سال سے انہیں ورسک ڈیم کی رائلٹی نہیں دی جا رہی جو علاقہ کے عوام کے ساتھ زیادتی ہے۔