بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / حکومت اور اساتذہ یونین کے مابین مذاکرات ناکام

حکومت اور اساتذہ یونین کے مابین مذاکرات ناکام

پشاور۔پشاور سمیت صوبے بھراو ر قبائلی علاقہ میں واقع سرکاری کالجوں کے اساتذہ نے دوسرے روز بھی ہڑتال جاری رکھی جس کے باعث تعلیمی سرگرمیاں ٹھپ ہو کر رہ گئیں ٗ حکومت اور اساتذہ کی یونین کے مابین مذاکرات بھی ناکام ہوگئے ٗ صوبائی حکومت نے مطالبات فوری طور پر ماننے سے انکار کر دیا جبکہ صوبائی حکومت نے تعلیمی اداروں میں لازمی سروس ایکٹ نافذ کر نے کا عندیہ دیا ہے اساتذہ کے ساتھ طلباء و طالبات نے بھی احتجاج شروع کردیا ہے۔

جائنٹ ایکشن کمیٹی کی کال پر صوبے بھر کے تمام اضلاع اور قبائلی علاقہ جات کے کالجز میں دوسرے روز بھی لیکچررز ٗ پروفیسرز نے ہڑتال کی ہڑتال کے موقع پر کسی بھی نا خوشگوار واقعہ سے نمٹنے کے لئے پولیس کی بھاری نفری پشاور کے مختلف کالجز کے باہر تعینات رہی کالجز میں تعلیمی سرگرمیاں معطل ہونے کے باعث طلباء و طالبات قبل از وقت چھٹی کر لیتے ہیں ۔

جبکہ مختلف شہروں میں اساتذہ کی ہڑتال کے خلاف طلباء نے احتجاج بھی شروع کردیا ہے خیبر پختونخوا حکومت کالجز میں اصلاحات لا رہی ہے جس کے خلاف کالجز کے اساتذہ نے احتجاج شروع کیا ہے احتجاج گزشتہ روز شروع ہوا تھا جبکہ آج بھی ممکنہ طور پر احتجاج جاری رہنے کے امکانات ہیں ذرائع نے بتایا ہے کہ محکمہ تعلیم اور محکمہ اعلیٰ تعلیم میں محکمہ صحت کی طرز پر لازمی سروس ایکٹ نافذ کیا جا رہا ہے ادھر گزشتہ روز صوبائی حکومت اور ایکشن کمیٹی کے مابین ابتدائی مذاکرات ناکام ہو گئے ہیں وزیراعلیٰ نے فوری طورپر مطالبات کی منظوری سے انکار کیا ہے ۔