بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / پشاورکی سڑکوں پرجگہ جگہ ناکے ٗ ضلع ناظم سے جواب طلب

پشاورکی سڑکوں پرجگہ جگہ ناکے ٗ ضلع ناظم سے جواب طلب

پشاور۔پشاور ہائی کورٹ کے جسٹس وقاراحمدسیٹھ اور جسٹس یونس تہیم پر مشتمل ڈویژن بنچ نے سیکیورٹی فورسز اور حکام کی جانب سے پشاور صدر، سیکرٹریٹ اور شہر کی دیگر اہم شاہراہوں کی بند ش کے خلاف دائر رٹ پرایگزیکٹیو آفیسر کنٹونمنٹ بورڈ پشاور اور ڈسٹرکٹ ناظم ضلع پشاور کو نوٹس جاری کر کے دس روز میں جواب طلب کر لیا ہے۔ جبکہ جسٹس وقاراحمدسیٹھ نے اس موقع پراپنے ریمارکس میں کہاکہ شہرسے صدر جاتے ہوئے شہری کو تھوڑے سے فاصلے میں دس مرتبہ اپنی شناخت کرانی پڑتی ہے جبکہ شہری کی اس طرح چیکنگ ہوتی ہے۔

جیسے وہ میکسیکوسے امریکہ میں داخل ہورہا ہو فاضل عدالت کو ایڈوکیٹ خورشید خان کی جانب سے دائر رٹ میں بتایا گیا کہ پشاور میں قائم تقریبا تمام پولیس اسٹیشن کے قریب سے گزرنے والے راستوں پر ریت کے تھیلے ، کنکریٹ بلاکس اور دیواریں کھڑی کر کے سڑک کے بیشتر حصہ کوشہریوں کے گزرنے کے لئے ناقابل استعمال بنادیا ہے اور اس طرح پولیس نے تجاوزات کر کے سڑکوں پر قبضہ کر رکھا ہے۔

، علاوہ ازیں قلعہ بالاحصار کا کل رقبہ سوا پندرہ ایکڑ ہے جبکہ حکام نے قلعہ بالا حصارکے ساتھ قائم نذر باغ پر غیر قانونی طور پر قبضہ کر رکھا ہے اس کے ساتھ ساتھ قلعہ بالاحصار کے ساتھ گزرنے والی سڑک بھی قلعہ کے حکام کے کنٹرول میں ہے اور وہ جس وقت چاہتے ہیں عوام کے لئے راستہ بند کر دیتے ہیں ۔رٹ میں مزید بتایا گیا کہ سنٹرل جیل پشاور کے ساتھ سول سیکرٹریٹ اور پولیس لائن کو جانے والی سڑک، ایم پی اے ہاسٹل کی آدھی سڑک ،پشاور میوزیم کے سامنے گورنر ہاؤس کے ساتھ جانے والی سڑک جو کہ وزیر اعلیٰ اور سپیکر ہاؤس اور سی سی پی او سے ہو کر خیبر روڈ کو نکلتی ہے ،ان تمام اہم شاہروں کو بلاکس اور دیواریں کھڑی کر کے بند کر دیا گیا جبکہ پشاور میوزیم کے داخلہ گیٹ کے اندرجبکہ خارجی راستہ کو تالا لگا کر بند کیا ہوا ہے۔

،جس سے شہریوں کو آمدورفت میں مشکلات کا سامنا ہے اور یہ شہریوں کے بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے ، علاوہ ازیں چند روز قبل سپریم کورٹ آف پاکستان نے کراچی ہائی کورٹ کی جانب سے شہر میں ہیوی ٹریفک پر پابندی لگائے جانے کے فیصلہ کو کالعدم قرار دیتے ہوئے قرار دیا تھا کہ نقل و حمل پر پابندی لگانا شہریوں کے بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہے، لہذا عدالت سے استدعا ہے کہ پولیس نے تھانے کی حدود سے باہر بلاکس رکھ کر جوناجائز قبضہ کیا ہوا ہے ،اسے فورا ہٹایا جائے ، قلعہ بالا حصارکی انتظامیہ نے نذر باغ اور قلعہ کے سامنے سے گزرنے والی سڑک پر قبضہ کیا ہے وہ فوری ختم کروایا جائے۔

غیر ملکی قونصلیٹ جنرل کے نزدیک سڑکیں ،سول سیکرٹریٹ ، پولیس لائن اور دوسرے سرکاری دفاتر جن سے روزانہ شہریوں کا واسطہ پڑتا ہے ، ان تمام سڑکوں سے فوری رکاوٹیں ختم کروا کے شہریوں کے لئے آزادانہ آمدورفت کو ممکن بنایا جائے، جس پر فاضل عدالت نے سیکیورٹی فورسز اور حکام کی جانب سے پشاور صدر، سیکرٹریٹ اور شہر کی دیگر اہم شاہراہوں کی بند ش کے خلاف دائر رٹ پر ایگزیکٹیو آفیسر کنٹونمنٹ بورڈ پشاور اور ڈسٹرکٹ ناظم ضلع پشاور کو نوٹس جاری کر کے جواب طلب کر لیا ہے اور سماعت 24 اکتوبرتک ملتوی کردی ۔