بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / لوڈشیڈنگ خاتمے کا خیبر پختونخوا پر فرق نہیں پڑیگا ٗ شبیر احمد

لوڈشیڈنگ خاتمے کا خیبر پختونخوا پر فرق نہیں پڑیگا ٗ شبیر احمد


پشاور ۔چیف ایگزیکٹیو پسکو شبیراحمد نے کہا ہے کہ لوڈشیڈنگ کے خاتمے سے متعلق وزیر اعظم کا وعدہ 2018 ء میں پورا ہو سکتا ہے لیکن اس کا زیادہ فرق خیبر پختونخوا پر نہیں پڑے گا کیو نکہ یہاں بجلی چوری زیادہ ہے دیہاتی علاقو ں میں زیادہ اور شہری علاقو ں میں بجلی چوری کم ہے ٗ جن علاقو ں میں 80 فیصد ریکوری ہو رہی ہے وہاں لوڈ شیڈنگ بھی ختم کر دی گئی ہے ۔

میڈیا کے ساتھ ایک نشست کے دوران انہوں نے بتا یا کہ بجلی چوری کے خلاف مہم میں پولیس ہمارے ساتھ کوئی تعاون نہیں کرتی جس کی وجہ سے ہم نے اپنے تھانے بنائے ان میں پشاور ٗ چارسدہ اور بنو ں کے تھانے شامل ہیں ٗانہوں نے کہا کہ صنعتی علاقو ں کے 21 فیڈرز ہیں ان میں کوئی لوڈ شیڈنگ نہیں کی جاتی ٗپسکو کو بجلی بلو ں کی مد میں رواں ماہ کے دوران 10 ارب روپے کی وصولی ہو ئی ہے ٗاس سے قبل یہ وصولی 8 ارب روپے تھی ٗہم نے ہر ایک فیڈر پر صارفین کو 4 سے8 گھنٹے کا ریلیف دیا ہے ٗپشاور شہر کے 52فیڈرز پر لوڈ شیڈنگ ختم کر دی گئی ہے ۔

ٗانہوں نے 100 سب ڈویژنز میں 84 فیصد فو ٹو بلنگ کی گئی ہے ٗ17 ترقیاتی منصو بے مکمل کر لئے گئے ہیں ٗ222.5 میگاواٹ بجلی سسٹم میں شامل کی گئی ہے ٗ38 نئے گرڈ سٹیشنز بنائے گئے ہیں ٗ48 ٹرانسمیشن لائنز قائم کی گئی ہیں 35 پاور ٹرانفارمرز کو بڑا کیا جا رہا ہے ٗانہوں نے کہا کہ پیسکو میں سزا و جزاء کے عمل سے تبدیلی آئی ہے۔ 500 افسرو ں اور اہلکاروں کو شوکاز نوٹس جاری کئے گئے ہیں۔

جبکہ 22 افسروں کو معطل کیا گیا ہے ٗلائن لاسز میں کمی اور ریکوری بہتر ہوئی ہے ٗانہوں نے کہا کہ حلقہ این اے فورمیں ضمنی انتخابات کے لئے انتخابی مہم جاری ہے یہاں امن و امان کو برقرار رکھنے کے لئے لوڈ شیڈنگ میں کمی کی گئی ہے ٗ پشاور ریپڈ بس منصو بے کازکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جی ٹی روڈ سے یونیورسٹی ٹاؤ ن تک تین فیزز میں بجلی کے نئے پو لو ں پر کام کیا جا رہا ہے پہلے فیز میں چمکنی جی ٹی رڈ سے قلعہ بالا حصار تک کام مکمل کر لیا گیا ہے۔

جس کی وجہ سے سٹی گرڈ سٹیشن سے جی ٹی روڈ کے علاقو ں میں شٹ ڈاؤن کا سلسلہ ختم کر دیا گیا ہے جبکہ باقی دو فیزز پر بھی کام بہت جلد مکمل کر لیا جائے گا ۔ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ ہم شخصیات اور علاقے کو دیکھ کر لوڈ شیڈنگ نہیں کرتے بلکہ متعلقہ علاقے کے فیڈز سے بجلی کی ترسیل اور ریکوری کی بنیاد پر لوڈ شیڈنگ کی جاتی ہے ۔