بریکنگ نیوز
Home / دلچسپ و عجیب / سفر کے دوران نشست کا انتخاب، بتائے آپ کی شخصیت کے راز

سفر کے دوران نشست کا انتخاب، بتائے آپ کی شخصیت کے راز


نیویارک: سفر کے دوران اپنی پسندیدہ سیٹ کا ملنا بہت مشکل مرحلہ ہوتا ہے۔ کچھ لوگ سفر پر جانے سے بہت پہلے ایئرپورٹ، ریلوے اسٹیشن اور بس اسٹینڈ پہنچ جاتے ہیں تاکہ اپنی پسندیدہ سیٹ کا انتخاب کرسکیں اور ان کا سفر آرام سے گزرے۔

سفر کے دوران اپنی پسندیدہ سیٹ کا ملنا بہت مشکل مرحلہ ہوتا ہے ؛فوٹوفائل

یہ حقیقت ہے کہ زیادہ تر لوگ سفر کے دوران کھڑکی والی سیٹ لینا پسند کرتے ہیں اوروہ لوگ جو کھڑکی والی سیٹ نہیں لے پاتے وہ کونے والی سیٹ پر بیٹھ جاتے ہیں، تاہم درمیان والی سیٹ کوئی بھی لینا نہیں چاہتا لیکن دیر سے پہنچنے کے بعد اکثر افراد کےلیے صرف درمیان والی سیٹیں ہی بچتی ہیں اور بحالت مجبوری انہیں ان ہی سیٹوں پر بیٹھنا پڑتا ہے۔ یہ لوگ درمیان والی سیٹوں پر بیٹھ تو جاتے ہیں لیکن ان  کا سفر پسندیدہ سیٹ نہ ملنے کی وجہ سے بہت برا گزرتا ہے اور پورے سفر کے دوران ان کا موڈ خراب رہتا ہے۔

کہنے کو تو سفر کے دوران سیٹ کا انتخاب بہت معمولی بات ہے لیکن تحقیقی اداروں کی ریسرچ کے مطابق سیٹ کا انتخاب آپ کی شخصیت کے مختلف پہلوؤں کو ظاہر کرنے کے ساتھ آپ کی شخصیت کے گہرے رازوں سے بھی پردہ اٹھاتا ہے۔

کونے والی سیٹ

سائیکولوجسٹ اور ٹیلی گراف ٹریول کے مطابق وہ افراد جو سفر کے دوران کونے والی یا سائیڈ والی سیٹ کا انتخاب کرتے ہیں وہ لوگ عام طور پر دوسروں کا خیال رکھنے والے اور نرم طبیعت کے مالک ہوتے ہیں اور اپنے ساتھ سفر میں موجود دیگر افراد کو پریشانی سے بچانے اور انہیں بار بار اٹھانے سے بچنے کےلیے سائیڈ والی سیٹ منتخب کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ وہ افراد جو مثانے سے جڑی بیماریوں میں مبتلا ہوتے ہیں وہ بھی سائیڈ والی سیٹ کا انتخاب کرتے ہیں تاکہ انہیں رفع حاجت کےلیے جانے میں کوئی پریشانی نہ ہو۔

کھڑکی والی سیٹ

ہارلی اسٹریٹ پرائیویٹ تھراپی کلینک کے چیف سائیکولوجسٹ ڈاکٹر بیکے اسپیلمین  کے مطابق سائیڈ والی سیٹ کا انتخاب کرنےوالے افراد کے برعکس کھڑکی والی سیٹ منتخب کرنے والے افراد خود غرض ہوتے ہیں اور صرف اپنے بارے میں سوچتے ہیں۔ اس کے علاوہ یہ افراد بہت جلد برہم ہوجاتے ہیں۔ بیہوریل سائیکولوجسٹ جو ہیمنگس کا کہنا ہے کہ یہ افراد بہت زیادہ خود اعتماد ہوتے ہیں اور حد سے زیادہ خود اعتمادی کی وجہ سے یہ دوسرے لوگوں کو اپنے سامنے کچھ بھی نہیں سمجھتے اور نہ ہی ان کی کوئی فکر کرتے ہیں جب کہ دوسروں کو تنگ کرنا ان کا مشغلہ ہوتا ہے۔