بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / نظام کی تبدیلی ترقی کا واحد حل ہے ٗ پرویز خٹک

نظام کی تبدیلی ترقی کا واحد حل ہے ٗ پرویز خٹک


پشاور ۔ وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے کہا ہے کہ غیر سفارشی اور شفاف نظام کا قیام تحریک انصاف کا ایجنڈا ہے جسکے لئے خیبر پختونخوا میں ساڑھے چار سال کامیاب کاوش کی ہے ملک کا نظام ٹھیک کئے بغیر سو سال تک بھی خوشحالی نہیں آسکتی بد قسمتی سے جو بھی یہاں آیا اس نے لوٹ مار اور پیداگیری کی انتہا کر دی اور پیسے کو ایمان بنا لیا ، اگر ایک گھر کا سربراہ ٹھیک نہ ہو تو گھر نہیں چل سکتا اور جس ملک کا صدر زرداری گزرا ہو اور اسکے وزیر اعظم نوازشریف کو کرپشن کی وجہ سے نا اہل کیا گیا ہو اسکا نظام کیسے چل سکتا ہے حکومت میں آنے کے بعد ان سیاسی پیداگیروں کو اسلام ، پاکستان ، روٹی ، کپڑا اور مکان اور پختون یاد نہ رہے ۔

یہ تمام نعرے صرف ووٹ حاصل کرنے کی حد تک استعمال کئے گئے اگر ہم حقیقی معنوں میں پاکستان کو ایک مضبوط اور خوشحال ملک دیکھنا چاہتے ہیں تو ہمیں سیاسی طور پر اپنے رویے اور سوچ میں تبدیلی لانی ہو گی عوام کے حقوق اور انسانیت کی فلاح کیلئے ڈاکوؤں کے خلاف منظم ہونا پڑے گا اور ملکی سطح پر نظام کی تبدیلی کے لئے عمران خان کو مضبوط کرنا ہو گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے یونین کونسل کڑوی کو سوئی گیس کی فراہمی کے افتتاح اور اضاخیل بالا ضلع نوشہرہ میں شمولیتی جلسوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر ضلع ناظم نوشہرہ لیاقت خٹک، ایم این اے ڈاکڑ عمران خٹک، اسحاق خٹک، تحصیل ناظم احد خٹک ، تحصیل نوشہرہ کے صدر زر عالم خان سوئی گیس این اے پانچ کے لیے وزیر اعلیٰ کے معاون عدنان خٹک ، افسر خان ، نعمت خان، قائم شاہ سید زمان شاہ ، شاہ سعود نے بھی خطاب کیا ۔

یونین کونسل کڑوی میں اعزاز، اسحاق، عدنان،تیمور، ساجد،حارث، نعمت،جنید جبکہ اضا خیل بالا میں شیراز گل، سلمان شاہ، اختیار محمد، عمر حیات ،نیک ولی شاہ، عاشق محمد، ماجد اور دیگر نے اپنے خاندان اور ساتھیوں سمیت عوامی نیشنل پارٹی اور پاکستان پیپلز پارٹی سے مستعفی ہو کر تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان کیا۔ وزیر اعلیٰ نے جلسوں سے خطاب کے دوران نظام کی تبدیلی کی اہمیت اجاگر کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں بد عنوانی ، لوٹ مار کا سلسلہ روکے بغیر خوشحالی کے دروازے نہیں کھل سکتے۔ نظام کی تبدیلی ترقی کا واحد حل ہے جسکے لئے ایماندار قیادت کی ضرورت ہے یہ ہوائی باتیں نہیں ہیں بلکہ ایسے حقائق ہیں جن پر دنیا کی تاریخ گواہ ہے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ تحریک انصاف نظام کی تبدیلی پر اسلئے زور دیتی ہے کہ پاکستان میں موجود نظام اشرافیہ کی آماجگاہ ہے جب الیکشن آتا ہے تو ہر سیاسی جماعت عوام کے سامنے نئے ہتھکنڈے لے کر آ جاتی ہے۔

اقتدار میں آنے کیلئے عوامی خدمات کے اداروں کا بے دریغ استعمال کیا جاتا ہے اور دھونس دھاندلی سے اقتدار میں آنے کے بعد غریب عوام کو یکسر بھول کر نئے سرے سے لوٹ مار کا سلسلہ شروع ہوجاتا ہے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے روٹی ، کپڑا اور مکان کے نام پر ، اے این پی نے پختونوں کے نام پر اور ایم ایم اے نے اسلام کے نام پر حکومتیں بنائیں ایم ایم اے بتا دے کہ اپنے پانچ سالہ دور اقتدار میں انہوں نے کوئی ایک کام جو اسلام کیلئے کیا ہو۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ہم یہ دعویٰ نہیں کرتے کہ ہم سب سے اچھے مسلمان ہیں تاہم اسلامی تعلیمات کے فروغ کا بھرپور جذبہ رکھتے ہیں اور عملی اقدمات کر رہے ہیں سکولوں میں ناظرہ اور قرآن بمعہ ترجمہ نصاب کا لازمی حصہ بنا دیا گیا ہے ۔

پرویز خٹک نے کہا کہ جب وہ صوبے میں بر سراقتدار آئے تو تعلیم ، صحت ، پولیس اور سماجی خدمات کے تمام شعبے زبوں حالی کا شکار تھے صوبائی اداروں میں رشوت عام تھی صوبائی حکومت نے اپنے منشور کے مطابق چار سال کے مختصر عرصے میں تمام محکموں کا قبلہ درست کیا اور انہیں عوام کی خدمت پر لگایا وزیر اعلیٰ نے کہا کہ بد قسمتی سے تعلیم جیسا اہم ترین شعبہ بھی اشرافیہ کی سیاست گردی سے نہ بچ سکا غریب عوام کے ذہین ترین بچے سرکاری سکولوں میں سہولیات نہ ہونے کی وجہ سے پیچھے رہ گئے امیر اور غریب میں خلاء بڑھتا چلا گیا تعلیمی عدم توازن کی وجہ سے معاشرے میں انتشار نے جنم لیا۔

وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ایک خوشحال اور متوازن معاشرے کے قیام کے لئے سب کو تعلیم کے معیاری مواقعے دینا ضروری ہیں مگر بدقسمتی سے اس ملک میں کسی سیاسی جماعت نے تعلیم پر توجہ نہیں دی یہ واحد صوبائی حکومت ہے جس نے تعلیم کو اپنی ترجیحات میں اول رکھا اور اربوں روپے خرچ کرکے سرکاری سکولوں کا معیار بلند کیا تاکہ غریب کا بچہ بھی امیر سے مقابلے کے قابل ہو سکے ۔عوام کو درپیش گیس اور بجلی کے مسائل کے حوالے سے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ جو کچھ صوبے کے اختیار میں ہے مساوی بنیادوں پر صوبہ بھر میں کر رہے ہیں کسی کو وسائل سے محروم نہیں رکھا، گیس اور بجلی جیسے مسائل کا تعلق وفاقی حکومت سے ہے اور صوبائی حکومت شروع دن سے صوبے اور عوام کے حقوق کی جنگ لڑ رہی ہے ۔

یہ عوام کا حق ہے انہیں ملنا چاہئے ہماری کوشش ہے کہ ہر گھر کو گیس ملے ہمارا صوبہ ضرورت سے زیادہ گیس پیدا کرتا ہے ہم نے وفاق سے معاملہ اٹھایا ہے کہ یہاں کے عوام کا زیادہ حق بنتا ہے کہ انکو گیس دی جائے۔قبل ازیں وزیر اعلیٰ نے یو سی کڑوی میں گیس کا افتتاح کیا۔