بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / اسلام آباد ہائیکورٹ کا مذہبی جماعتوں کو دھرنا ختم کرنے کا حکم

اسلام آباد ہائیکورٹ کا مذہبی جماعتوں کو دھرنا ختم کرنے کا حکم


 اسلام آباد: ہائیکورٹ نے مذہبی جماعتوں کو فیض آباد انٹرچینج پر گذشتہ 8 روز سے جاری دھرنا ختم کرنے کا حکم دے دیا۔

 دھرنا ختم کریں کیوں کہ اس سے بچے، بوڑھے، ملازمین، طالب علم سب متاثرہو رہے ہیں، عدالت۔ فوٹو:فائل

اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ختم نبوت کی شقوں میں ردوبدل کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی درخواست کی سماعت کی، جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ریمارکس دیئے کہ معاملہ جب عدالت میں آگیا تو خدا کا خوف کریں، چیف جسٹس کے بارے میں جو الفاظ استعمال کیے گئے ان پر معافی مانگیں، نیکی کا کام غلط طریقے سے کیا جائے تو بھی وہ غلط ہوتا ہے۔

سماعت کے دوران جسٹس شوکت صدیقی نے مذہبی جماعت کے وکیل کو ہدایت کی کہ آپ لوگ قانون کی پابندی کریں، آپ کی پٹیشن دھرنا ختم کرنے سے مشروط ہوگی۔ عدالت نے مذہبی جماعتوں کو  فیض آباد انٹرچینج پر دھرنا ختم کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ دھرنا ختم کریں تاکہ عوام کی مشکلات ختم ہوں، دھرنے سے بچے، بوڑھے، ملازمین اور طالب علم سب متاثرہو رہے ہیں۔ عدالت نے کیس کی مزید سماعت 29 نومبر تک کے لیے ملتوی کردی۔

واضح رہے کہ مذہبی جماعتوں نے فیض آباد انٹرچینج پر گزشتہ 8 روز سے دھرنا دے رکھا ہے، دھرنے کے شرکا ختم نبوت سے متعلق آئینی شقوں میں ردو بدل کرنے والوں کے خلاف کارروائی اور وزیر قانون زاہد حامد کے استعفیٰ کا مطالبہ کررہے ہیں۔