بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / یاسین ملک گرفتار ٗمیر واعظ نظر ٗ سرینگر میں کرفیو کا سماں

یاسین ملک گرفتار ٗمیر واعظ نظر ٗ سرینگر میں کرفیو کا سماں


سرینگر۔مقبوضہ کشمیر میں کٹھ پتلی انتظامیہ نے بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں ایک کشمیری نوجوان کی شہادت پر احتجاجی مظاہروں کو روکنے کیلئے آج سرینگر میں کرفیو جیسی پابندیاں نافذ کر دی ہیں۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق فوجیوں نے مغیث احمد میر نامی نوجوان کو گزشتہ رات سرینگر کے مضافاتی علاقے زکورہ میں محاصرے اور تلاشی کی کارروائی کے دوران شہید کر دیاتھا۔قابض انتظامیہ نے سرینگر کے پارمپورہ، صفہ کدل، نوہٹہ، خانیار، مہاراج گنج ، مائسمہ اور کرال کھڈ تھانوں کی حدود میں آنے والے علاقوں میں پابندیاں لگا دی ہیں۔

کٹھ پتلی انتظامیہ نے طلباء کو احتجاجی مظاہروں سے روکنے کیلئے سکولز اورکالجز بھی بند رکھنے کا حکم دیا ہے۔ کشمیر یونیورسٹی سرینگر میں تدریسی سرگرمیاں بھی معطل کر دی گئی ہیں۔ دریں اثنابھارتی پولیس نے جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک کو گرفتار کر لیا ہے جبکہ حریت فورم کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق کو گھر میں نظر بند کر دیا گیا ہے ۔کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی گیلانی گزشتہ کئی برس سے سرینگر میں گھر میں نظر بند ہیں۔لبریشن فرنٹ کے ترجمان کے ایک بیان کے مطابق محمد یاسین ملک کو آج سرینگر میں انکے گھر سے گرفتار کر کے سینٹرل جیل منتقل کیا گیا۔

حریت فورم کے ترجمان نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہا کہ میر واعظ عمر فاروق کو گزشتہ رات کو گھر میں نظر بند کیاگیا۔حریت رہنماؤں کی نظر بندی اور گرفتار ی کا مقصد انہیں شہید نوجوان مغیث احمد میر کے اہلخانہ کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے انکے گھر جانے سے روکنا ہے۔