بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / ہائیکورٹ بارکی خیبر پختونخوا حکومت کو ایک ہفتے کی ڈیڈ لائن

ہائیکورٹ بارکی خیبر پختونخوا حکومت کو ایک ہفتے کی ڈیڈ لائن


پشاور۔پشاورہائی کورٹ بارایسوسی ایشن نے مردان باراورپشاورکے وکلاء کودرپیش پارکنگ کے مسئلے سمیت دیگرمطالبات کے حل کے لئے خیبرپختونخواحکومت کو ایک ہفتے کی ڈیڈلائن دے دی ہے اورمتنبہ کیاہے کہ مقررہ مدت میں مطالبات تسلیم نہ ہونے کی صورت میں صوبہ گیراحتجاج کاآغاز کیاجائے گاجس کی تمام ترذمہ داری صوبائی حکومت پرعائد ہوگی اس بات کامطالبہ پیرکے روز پشاورہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کے جنرل باڈی اجلاس میں پیش کردہ قرار داد میں کیاگیا۔

جسے متفقہ طورپرمنظورکرلیاگیاہائی کورٹ بار کے صدر ارباب عثمان کی صدارت میں منعقد ہونے والے اجلاس میں خیبرپختونخوابارکونسل کے وائس چیئرمین محمدسریرخان ٗ ہائی کورٹ بار کے جنرل سیکرٹری رحمان اللہ ٗ پشاوربار کے صدرفضل واحدایڈوکیٹ ٗ مردان ٗ صوابی اوردیگر اضلاع کے بارزکے صدوراورجنرل سیکرٹریز نے کثیرتعداد میں شرکت کی اس موقع پر عبدالطیف آفریدی ٗ محمد ایاز خان ٗ غلام نبی ٗ نصیرخان ٗ اوردیگروکلاء نے خطاب کیامقررین نے صوبائی حکومت کی جانب سے مردان بار کے ساتھ وعدہ کرنے کے باوجود خصوصی گرانٹ ادا نہ کرنے اور مردان جیل میں جوڈیشل کمپلیکس تعمیرنہ پرشدیدغم وغصے کااظہار کیا۔

انہوں نے بتایا کہ پشاورہائی کورٹ کے باہروکلاء کو گاڑیوں کی پارکنگ کاشدیدمسئلہ درپیش ہے اوراس حوالے سے متعدد مرتبہ صوبائی حکومت کو آگاہ بھی کرچکے ہیں کہ پشاورہائی کورٹ سے متصل پلاٹ پرپارکنگ پلازہ تعمیرکیاجائے اوروزیراعلی کے مشیرعارف یوسف ایڈوکیٹ کی یقین دہانی کے باوجود ان وعدوں کو ایفا نہیں کیاگیااس موقع پرکلاء کے نمائندہ وفد نے پشاورہائی کورٹ کے چیف جسٹس یحیی آفریدی سے ملاقات کی اوروکلاء برادری کو درپیش مسائل سے آگاہ کیا۔