بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / نشہ آور اشیاء کی روک تھا م کیلئے قانون سازی کافیصلہ

نشہ آور اشیاء کی روک تھا م کیلئے قانون سازی کافیصلہ


پشاور ۔خیبر پختونخوا حکومت نے تعلیمی اداروں میں آئس سمیت تمام نشہ آور اشیاء کے استعمال کے روک تھا م کے لیے قانون سازی کافیصلہ کیاہے اسی طرح فلموں میں فحاشی کے خلاف بھی مؤثر قانون لایا جائیگا اس سلسلہ میں سپیکر خیبر پختونخوااسمبلی اسد قیصرنے کہا ہے کہ نوجوانوں کو بے راہ روی سے بچانے کیلئے آئس سمیت دیگر نشہ آور اشیاء کو ممنوع قراردینے کیلئے قانون سازی وقت کا اہم تقاضاہے ۔

انہوں نے ان خیالات کا اظہار صوبائی اسمبلی سیکرٹریٹ میں اپنی زیر صدارت ایک اعلیٰ سطحی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا اجلاس میں صوبائی وزراء عاطف خان ،محمود خان اور خیبر پختونخوا امن جرگہ کے چیئر مین سید کمال شاہ کے علاوہ سیکرٹری اسمبلی نصراللہ خان خٹک سمیت دیگر متعلقہ حکام نے شرکت کی ۔

اجلاس میں نوجوانوں خصوصاًکالجوں اور سکولوں میں آئس سمیت دیگر نشہ آور اشیاء کے استعمال پر سخت افسوس کا اظہار کرتے ہوئے تفصیلی غور وخوض کیا گیا اور اتفاق رائے سے نشہ آور اشیاء پرمکمل پابندی کا اطلاق کرنے کیلئے سخت ترین قانون سازی کرنے کا فیصلہ کیا ۔اجلاس میں پشتوفلموں سمیت دیگر فلموں سے فحاشی وعریانیت کے خاتمے کیلئے قانون سازی کے حوالے سے بھی اہم فیصلے کئے گئے اور اس امر پر انتہائی افسوس کا اظہار کیا گیا کہ پشتو فلموں میں پختون کلچر کے برعکس مناظر کشی کی جاتی ہے۔

جس کے نوجوانوں پر غلط اثرات مرتب ہوئے ہیں۔اجلاس میں متعلقہ کمیٹی کو ہدایت کی گئی کہ وہ جلد ازجلد شادی بیاہ سے متعلق جہیز ایکٹ پر تفصیلی بحث کرکے فضول رسم ورواج اور روایات کے خاتمے کیلئے تجاویز دیں تاکہ صوبہ کے غریب عوام کو ریلیف دیا جا سکے ۔اجلاس میں سودی کاروبار کے خاتمے کے حوالے سے کی گئی قانون سازی پر بھی غورکیا گیا اور اتفاق رائے سے اس میں موجود سقم کو ختم کر نے کا فیصلہ کیا گیا