بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / پشاور حملے کا آنکھوں دیکھا حال طالبعلم کی زبانی

پشاور حملے کا آنکھوں دیکھا حال طالبعلم کی زبانی


پشاور۔زراعت کے تربیتی مرکز پر دہشت گرد حملے کے دوران ہاسٹل میں موجود ایک عینی شاہد طالب علم نے بتایاکہ وہ اپنے کمرے میں موجود تھا کہ اچانک فائرنگ کی آوازیں آئی باہر نکلا تو چند دہشت گرد کمروں میں گھس کر طلباء کو گولیوں کا نشانہ بنارہے تھے ۔

طالب علم صالح احمد نے بتایا کہ 12 ربیع الاول کے سلسلے میں چھٹی تھی جس کی وجہ سے زیادہ تر طالبعلم اپنے اپنے گھروں کو گئے ہوئے تھے جو نہیں گئے تھے وہ بھی سو رہے تھے تقریباً آٹھ بج کر 45 منٹ پر دھماکے کی آواز آئی باہر نکلا تو نیچے چند مسلح دہشت گرد ایک جگہ پر پوزیشن سنبھالے فائرنگ کررہے تھے میں ان کے چہرے نہیں دیکھ سکا کیونکہ وہاں بہت بھیڑ تھی اور افراتفری کا عالم تھا اس دوران جو بھی باہر نکلتا دہشت گرد ان پر فائرنگ کرتے صالح احمد نے بتایا کہ جو طلبہ بچ کر آئے ۔

انہوں نے کمروں کے دروازے اندر سے بند کر دیئے لیکن دہشت گردوں نے ایک ایک کمرے کا دروازہ توڑا اور پھر ان کو مارا ہم لوگ بھی چھپ گئے تھے ،ہم نے اپنا دروازہ اندر سے بند کر دیا، حملہ آوروں نے ہمارا دروازہ کھولنے کے لیے زور لگایا مگر ہم نے دروازہ نہیں کھولااوراس دوران پولیس کو سب سے پہلے کال بھی میں نے کی میں نے پھر دوبارہ فون کیا اور تیسری کال پر پولیس نے پہنچ کر آپریشن شروع کر دیا۔