بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / پشتون ثقافت کے منافی فلموں کیخلاف قانون سازی

پشتون ثقافت کے منافی فلموں کیخلاف قانون سازی


پشاور۔پاکستان تحریک انصاف کے ممبرصوبائی فضل الہٰی خان نے کہاہے کہ پشتوفلمیں اورسی ڈی ڈرامے پختون کلچرکے منافی کے ساتھ ساتھ معاشرے میں بگاڑکاباعث بن رہے ہیں،صوبائی اسمبلی کے حالیہ اجلاس میں اس حوالے سے قانون سازی کی جائے گی پشاورپریس کلب میں دیگرکے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے ایم پی اے فضل الٰہی خان نے کہاکہ ہمارے ہاں جوسی ڈی ڈرامے اورفلمیں بن رہے ہیں ۔

وہ قطعی ہمارے کلچراورپختون معاشرے کی عکاسی نہیں کررہے ہیں بلکہ الٹااس معاشرے میں بگاڑکاسبب بن رہے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ چندمخصوص لوگ پشتوثقافت کوتباہ کرنے پرتلے ہوئے ہیں اوراپنے ڈراموں اورفلموں میں پشتونوں کا غلط تصویردنیاکوپیش کررہے ہیں جبکہ دوسری جانب اردواوردیگرزبانوں میں بننے والی فلموں اورڈراموں میں بھی پشتونوں کاوہ کلچرپیش کیاجاتاہے جس سے ہمارادوردورکاتعلق نہیں ہوتا۔انہوں نے کہاکہ ان ڈراموں اورفلموں نے ہمارے نوجوان نسل پربرے اثرات مرتب کئے ہیں اوران کے ذہنوں کوخراب کردیاہے۔فضل الٰہی خان نے کہاکہ خیبرپختونخوااسمبلی کی رواں اجلاس کے دوران میں ایک بل پیش کی جائے گی جسے منظورکرنے کیلئے دیگرسیاسی جماعتوں بشمول اپوزیشن نے یقین دہانی کرائی ہے ۔

بل کے تحت ایک سنسربورڈقائم کیاجائے گاجوفلموں میں شاعری ،ڈائیلاگ فنکاروں کے لباس سمیت ہرچیزکی نگرانی کریگی اورایسے فلموں پرپابندی عائدکی جائے گی جوہمارے ثقافت سے تعلق نہ رکھتے ہو۔انہوں نے کہاکہ فلمسازوں کوچاہیے کہ وہ ایسی فلمیں بنائے جوسبق آموزہونے کے ساتھ معاشرے کی بہترترجمانی کرے نہ کہ اس میں بگاڑکاباعث ہوہم قطعاًایسی فلموں اورڈراموں کوبرداشت نہیں کریں گے جس میں ہماری ثقافت کی غلط تصویرپیش کی گئی ہو۔