بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / خناق نے کرک میں تباہی مچا دی

خناق نے کرک میں تباہی مچا دی


کرک ۔ جان لیوا مرض خناق نے کرک میں تباہی مچا تے ہوئے 24 گھنٹے میں مزید دو بچوں کی جان لے لی ایک ماہ میں ہلاکتوں کی مجموعی تعداد دس تک جا پہنچی ، محکمہ صحت نے مرض سے نمٹنے کیلئے حفاطتی ٹیکوں کی مہم شروع کر دی ۔ جان لیوا مرض خناق جس نے گذشتہ دوماہ سے ضلع کرک سمیت بنوں اور لکی مروت کو لپیٹ میں لے رکھا ہے نے گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران چلڈرن ہسپتال لاہور میں زیر علاج کرک کے چار سالہ فرحین دختر ساجداللہ سکنہ الگڈی شرقی اور گیارہ سالہ حکمت اللہ ولدعجب خان سکنہ لتمبرکی جان لے لی ہے جبکہ چار روزقبل نو سالہ فروا شاہین دختر سجاد انور سکنہ میٹھا والا کرک اور چار سالہ نعمان سکنہ عظیم کلہ بنوں بھی اس موذی مرض کی بھینٹ چڑھ چکے ہیں جبکہ یہ بیماری تقریباً ایک ماہ قبل یونین کونسل احمد آباد میں بھی سات بچوں کی جانیں نگل چکی ہے جس سے ایک ماہ میں کرک میں ہلاکتوں کی مجموعی تعداد دس تک جاپہنچی ہے ۔

علاوہ ازین معلوم ہوا ہے کہ اس موذی سے گذشتہ چوبیس گھنٹے کے دوران درجنوں بچوں متاثر ہو ئے جس سے عوام میں شدید خوف و ہراس پھیل چکا ہے واضح رہے کہ کرک سمیت جنوبی اضلاع میں اس مرض کے علاج کا کوئی خاص انتظام موجود نہیں اور محکمہ صحت کے مقامی ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ مرض کے فوری علاج کیلئے موزوں ترین اے ڈی ایس ٹیکے کے چار بڑے ہسپتالوں میں بھی دستیاب نہیں جس کی وجہ سے مرض سے متاثرہ بچوں کو علاج کیلئے لاہور منتقل کیا جا رہا ہے ۔

واضح رہے کہ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کی جانب سے اے ڈی ایس ٹیکے تقریباً ایک ماہ سے فراہم نہیں کئے گئے جس سے متعلق محکمہ صحت کے حکام نے رابطہ کرنے پر بتایا ہے کہ یہ ٹیکے 10دسمبر تک خیبر پختونخوا کو پہنچ جا ئینگے اس سلسلے میں ’’آج‘‘ جب محکمہ صحت کرک کے فوکل پرسن ڈاکٹر ماجد خٹک سے رابطہ کرکے ان کی موقف جاننے کی کوشش کی تو انکا کہنا تھا کہ اس سلسلے میں ہم نے اپنی ذمہ داری پوری کی ہے اوردس روز قبل ضلع بھر کے 21 یونین کونسلز میں دو ہفتے تک خصوصی مہم چلا کر بچوں کو حفاظتی ٹیکے لگا چکے ہیں لیکن مرض لاحق ہونے کے بعد اس کا علاج انتہائی مہنگا ہونے کے ساتھ ساتھ یہاں ہونا مشکل ہے ۔

دریں اثناء محکمہ صحت کرک نے خناق سے متاثرہ علاقوں میں خصوصی ٹیمیں تشکیل دیکر حفاطتی ٹیکے لگوانے کا خصوصی مہم بھی شروع کر دیا ہے اور محکمہ کے اہلکاروں سٹی ہسپتال سمیت شہر کے نواحی علاقے الگڈی کرک میں دو مقامات پر سینکڑوں بچوں کو خناق کے حفاطتی ٹیکے لگوائے۔