بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / ہیومن رائٹس واچ نے بھارت کا ایک اور بھیانک چہرہ بے نقاب کر دیا

ہیومن رائٹس واچ نے بھارت کا ایک اور بھیانک چہرہ بے نقاب کر دیا

ممبئی ۔انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ہیومن رائٹس واچ نے بھارت کا چہرہ بے نقاب کر دیا ،7سال کے دوران بھارت میں زیر حراست 600 افرادکو تشدد کے ذریعے ہلاک کیاگیا ۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق نیویارک میں انسانی حقوق کی عالمی تنظیم نے بھارت کا ایک اور بھیانک چہرہ بے نقاب کر دیا ۔ ہیومن رائٹس گروپ کی رپورٹ کے مطابق بھارت میں2009 سے 15 کے دوران پولیس کے تشدد سے 600 قیدی ہلاک ہوگئے ۔

بھارتی پولیس گرفتاریوں کے مروجہ طریقہ کار پر عمل نہیں کرتی اور ان ہلاکتوں کی وجہ خودکشی یا بیماری قرار دے دیتی ہے ۔ رپورٹ کے مطابق پولیس تھرڈ ڈگری کا استعمال کرتے ہوئے ملزموں کو مار پیٹ سے جرم منواتی ہے ۔ اتر پردیش سے ایک ریٹائر بھارتی پولیس افسر کا کہنا تھا کہ ملزم مارپیٹ کے بغیر کچھ بولتے نہیں ۔

دو ہزار پندرہ میں 97 افراد پولیس تشدد سے ہلاک ہوئے ، ان میں سے 67 گرفتاری کے صرف 24 گھنٹے بعد اور مجسٹریٹ کے سامنے پیش کیے جانے سے پہلے بھارتی پولیس کی درندگی کا شکار ہو کر موت کی وادی میں چلے گئے ۔ اپریل 2012میں 37 سالہ شیامو سنگھ کو پولیس نے تشدد کر کے مار ڈالا اور بعد میں رپورٹ پیش کی کہ اس نے خود کشی کی تھی ۔ انکوائری رپورٹ میں بھی شیامو سنگھ کیس میں ملوث7پولیس اہلکاروں کو کلئیر قرار دے دیا گیا تھا ۔