بریکنگ نیوز
Home / بزنس / بلاسود قرض سکیم کے 99فیصد نتائج حاصل ہوئے ہیں، اسحاق ڈار

بلاسود قرض سکیم کے 99فیصد نتائج حاصل ہوئے ہیں، اسحاق ڈار

اسلام آباد ۔وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ بلاسود قرض سکیم کے 99فیصد نتائج حاصل ہوئے ہیں قرض سکیم کا مقصد نہ صرف پسے ہوئے طبقے کو اپنے پاؤں پر کھڑا کرنا ہے بلکہ خواتین کو بھی با اختیار اور باوقار بنانا ہے قرض سکیم کے تحت نہ صرف ساڑھے پانچ ارب روپے کے قرض دیے گئے بلکہ اتنی ہی وصولیاں بھی ہوئیں وزیراعظم کی قرض سکیم سے ڈھائی لاکھ خاندانوں کو فائدہ ہو گا جس سے پاکستان ترقی بھی کرے گا ہم ایسے پروگرام چلاتے رہیں گے جس سے نہ صرف یوتھ اپنے پاؤں پر کھڑی ہو گی بلکہ پسا ہوا طبقہ بھی عزت وقار سے زندگی بسر کر سکے گا۔

اسلام آباد میں وزیر اعظم کی بلا سود قرضہ سکیم کے حوالے سے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 42 لاکھ لوگوں نے اس سکیم سے مستفید ہوئے ہیں بلاسود قرض سکیم 44اضلاع اور 427یونین کونسلوں میں جاری ہے سکیم کے تحت قرضہ لینے والی 62فیصد خواتین ہیں حکومت نے اس سال سکیم کے لیے چار ارب روپے مختص کیا تھا جس میں ابھی تک تین ارب ساٹھ کروڑ دیا جا چکا ہے اب تک کل ساڑے پانچ ارب روپے کے قرضے دیے گئے اور اتنی ہی وصولی ہوئی ہے ۔

قرضہ سکیم کے 99فیصد نتائج حاصل ہوئے ہیں قرضہ سکیم کا مقصد خواتین کو بھی با اختیار بنانا ہے حکومت اپنی ذمہ داری پوری کرے گی کل چھ سکیمیں ہیں موجودہ سکیم کے علاوہ یوتھ بزنس لون ٹریننگ سکیم ، سکل ڈویلمپنٹ، لیپ ٹاپ اور فری انوسٹمنٹ سکیم ہے قرضہ سکیم کا مقصد پسے ہوئے طبقے کو پاؤں پر کھڑا کرنا ہے وزیر اعظم کی بلا سود قرضہ سکیم سے ڈھائی لاکھ خاندانوں کو فائدہ ہوا ہے وزیر خزانہ نے کہا کہ ہم نے 27اکتوبر کو پاکستان مائیکروفنانس انوسٹمنٹ کمپنی قائم کی ہے جس میں پی پی ایف 49فیصدڈیفیڈینٹ یو کے 34 فیصد کے ایف ڈبلیو آف جرمنی 17فیصد شراکت دار ہے پاکستان مائیکروفنانس کمپنی کے ہدف کو 2019تک ایک کروڑ سے بڑھانا ہے ایک سروے کے مطابق پاکستان میں ڈھائی کروڑ لوگوں کو مائیکروفنانس کی ضرورت ہے۔

وزیر خزانہ نے کہا کہ پاکستان ترقی کی راہ پر گامزن ہے اور پاکستان کے دیوالیہ ہونے کا تاثر دفن ہو چکا ہے آج پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر پاکستان کی تاریخ کے بلند ترین ہے آج پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر 23اربڈالرسے زیادہ ہیں اگر ہم ایمانداری سے اس ملک کو آگے لے جانے کی کوشش کریں تو اس ملک میں کسی چیز کی کمی نہیں پاکستان کے محصولات میں گزشتہ تین برس میں 60فیصد اضافہ ہوا ہے۔

پاکستان میں ٹیکس محصولات 30جون 2016کو 3112ارب جمع ہوئے انشاء اللہ ان میں مذید اضافہ کیا جائے گا اپنی آمدنی بڑھانے سے پاکستان کا قرضہ آدھا ہو گیا یقینی قرض لینے کی شرح میں 50فیصد کمی آئی ہے انہوں نے کہا کہ 1999میں جب بغاوت ہوئی تو پاکستان 1200میگاواٹ سرپلس تھا ایک سیکنڈ کی لوڈ شیڈنگ نہ تھی۔

ہم اپنے ہمسایہ ممالک کو 1200میگاواٹ اضافی بجلی بیچنے کے لیے بات چیت کر رہے تھے مگر افسوس 16سال کے بعد اس ملک میں 12سے 14گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ شہروں میں 14سے 16گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ دیہاتوں میں ہوئی یہ سب کچھ مجرمانہ غفلت کی وجہ سے ہوئی اب ہم دوبارہ لوڈ شیڈنگ پر قابو پا رہے ہیں اور وزیر اعظم اس میں خود دلچسپی لے رہے ہیں آج لوڈ شیڈنگ کم ہو کر شہروں میں تین گھنٹے اور دیہاتوں میں چار گھنٹے پر آچکی ہے ۔