بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / وزیر اعلی کی مختلف محکموں میں قواعد و ضوابط کی تشکیل میں تاخیر پر بر ہمی

وزیر اعلی کی مختلف محکموں میں قواعد و ضوابط کی تشکیل میں تاخیر پر بر ہمی


وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے صوبائی حکومت کے پاس کردہ قوانین کے تناظر میں قواعد و ضوابط جلد تشکیل دینے کی ہدایت کی ہے۔ انہوں نے متعلقہ صوبائی محکموں کے انتظامی سیکرٹریوں کو اس سلسلے میں پندرہ دن کے اندر رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی اور کہا کہ چیف سیکرٹری حکومتی ہدایت پر عملدرآمد یقینی ؂بنانے کیلئے خود نگرانی کریں اور کام نہ کرنے والے ذمہ داران کے خلاف کاروائی کی جائے۔ قواعد و ضوابط کی تشکیل کیلئے جن محکموں کی استعداد کم ہے وہ اپنی استعداد میں اضافہ کریں۔
جو محکمے اس عمل میں نا اہل ہیں یا دانستہ طور پر غفلت کے مرتکب ہیں ان کی رپورٹ پیش کی جائے۔ قواعد و ضوابط کی تشکیل میں مزید کسی تاخیر کی گنجائش نہیں۔ وزیراعلیٰ پرویز خٹک کی زیر صدارت اعلیٰ سطح کے اجلاس میں صوبائی حکومت کے پاس کردہ قوانین کے قواعد و ضوابط کی تشکیل کے عمل کا جائزہ لیا گیا ۔ صوبائی وزیر قانون امتیاز شاہد قریشی، چیف سیکرٹری عابد سعید، ایڈیشنل چیف سیکرٹری، صوبائی محکموں قانون، اوقاف، زراعت، اسٹبلشمنٹ، داخلہ، اعلیٰ تعلیم، ماحولیات، صحت، اطلاعات، صنعت، بلدیات، محنت، سماجی بہبود اور ایکسائز کے انتظامی سیکرٹریوں اور سٹریٹیجک سپورٹ یونٹ کے سربراہ صاحبزادہ سعید نے اجلاس میں شرکت کی۔
وزیراعلیٰ نے مختلف محکموں میں قوانین کے قواعد و ضوابط کی تشکیل میں تاخیر اور سست روی پر برہمی کا اظہار کیا۔ وزیراعلیٰ نے سماجی بہبود، سپورٹس، ٹرانسپورٹ، جنگلات، خزانہ، بلدیات، احتساب، خوراک، پاٹا، صحت اور دیگر محکموں کو پندرہ دنوں کے اندر جبکہ لیبر ڈیپارٹمنٹ کو آئندہ جون تک قواعد و ضوابط تشکیل دینے کی ہدایت کی۔ وزیراعلیٰ نے چترال کے سیاحتی مقامات کی ترقی کیلئے گلیات ڈویلپمنٹ اتھارٹی کی طرز پر اتھارٹی بنانے اور کاغان اور ناران کی ترقی کیلئے رولز آف بزنس تشکیل دینے کی بھی ہدایت کی۔
وزیراعلیٰ نے کہا کہ جنوبی اضلاع ڈیرہ اسماعیل خان، بنوں، کرک، کوہاٹ اور لکی وغیرہ کے سیاحتی مقامات کی ترقی کیلئے بھی علیحدہ ڈویلپمنٹ اتھارٹی بنائی جائے گی۔ ہم مذکورہ اضلاع کے سیاحتی سپاٹس کو ترقی دیکر سیاحت کیلئے کھول دیں گے۔ اس اقدام سے مقامی معیشت مضبوط ہو گی اور روزگار کے مواقع بھی پیدا ہوں گے۔ وزیراعلیٰ نے سی پیک کے تناظر میں ریلوے ٹرک کا طریق کار وضع کرنے کا بھی حکم دیا اور کہا کہ ہم نے پورے صوبے کو باہم مربوط کرنا ہے۔ پشاور، نوشہرہ، چارسدہ، مردان اور صوابی پر مشتمل سرکلر ریلوے ٹریک بدستور شامل ہو چکا ہے۔
دریں اثناء وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے ہسپتالوں میں علاج معالجہ کی معیاری سہولیات یقینی بنانے اور عوامی توقعات کے مطابق ڈیلور کرنے کیلئے ڈویژنل سطح پر مانیٹرنگ ٹیمیں تشکیل دینے کی ہدایت کی ۔وہ وزیراعلیٰ ہاؤس پشاور میں محکمہ صحت پر سٹاک ٹیک اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ وزیر صحت شہرام تراکئی، چیف سیکرٹری عابد سعید، محکمہ صحت اور خزانہ کے انتظامی سیکرٹریوں اور سٹریٹیجک سپورٹ یونٹ کے سربراہ صاحبزادہ سعید نے اجلاس میں شرکت کی۔