بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / افغان سیکورٹی فورسز کے آپریشنز میں59شدت پسند ہلاک ، 28زخمی

افغان سیکورٹی فورسز کے آپریشنز میں59شدت پسند ہلاک ، 28زخمی

کابل۔افغان سیکورٹی فورسز کے انسداد دہشتگردی آپریشنز اور جھڑپوں کے دوران پاکستانی سمیت 59شدت پسند ہلاک اور 28زخمی ہوگئے جبکہ شمال مشرقی صوبہ بدخشان میں مسجد کے قریبدھماکے میں 4پولیس اہلکار ہلاک اور 5دیگر زخمی ہوگئے،طالبان نے حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے 2افسران سمیت 10پولیس اہلکاروں کی ہلاکت کا دعویٰ کیا ہے ۔پیر کو افغان میڈیاکے مطابقسیکورٹی فورسز کے آپریشن میں3مقامی کمانڈروں سمیت 51شدت پسند ہلاک اور 28زخمی ہوگئے ۔ وزارت دفاع کے بیان میں کہا گیا ہے کہ افغان نیشنل سیکورٹی فورسز نے ملک کے مختلف حصوں میں انسداد دہشتگردی آپریشنز کیے ہیں جن میں 51شدت پسند مارے گئے جن میں 3مقامی کمانڈر بھی شامل ہیں ۔

آپریشن کے دوران 28شدت پسند زخمی بھی ہوئے جبکہ ایک کو گرفتار کرلیا گیا ۔وزارت دفاع کے مطابق آپریشنز صوبہ ننگرہار،کپیسا، لغمان، لوگر، پکتیا ،پکتیکا، غزنی ،ارزگان،زابل،ہرات،نمروز، فریاب،سرائے پل،قندوز،تخار،بدخشان، بلغ، بغلان، جاؤزجان اور ہلمند کے مختلف علاقوں میں کیے گئے ۔ادھر مغربی صوبہ فرح میں افغان سیکورٹی فورسز کے ساتھ جھڑپ میں پاکستانی سمیت 8شدت پسند ہلاک ہوگئے ۔صوبائی سیکورٹی حکام نے بتایا ہے کہ گزشتہ 24گھنٹوں میں شدت پسندوں اور افغان سیکورٹی فورسز کے درمیان مختلف مقامات پر جھڑپیں ہوئی ہیں جن میں 8شدت پسند مارے گئے جن میں ایک پاکستانی بھی شامل ہے ۔ شمال مشرقی صوبہ بدخشان میں ایک مسجد کے قریب ہونے والے دھماکے میں 4پولیس اہلکار ہلاک اور 5دیگر زخمی ہوگئے ۔

صوبائی گورنر کے ترجمان جواد رحیمی نے بتایا ہے کہ واقعہ ضلع افتال میں اس وقت پیش آیا جب پولیس اہلکار علاقے میں ایک سرچ آپریشن میں مصروف تھے ۔افغان طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ حملے میں 2افسران سمیت 10پولیس اہلکار ہلاک ہوئے ہیں تاہم پولیس چیف سخی داد حیدری نے طالبان کے دعو ے کو مسترد کیا ہے ۔دوسری جانب افغان صدر ڈاکٹر اشرف غنی نے اپنی جانیں قربان کرنے والے فوجیوں کے خاندانوں کو اگلے تین سالوں میں اپارٹمنٹس دینے کی ایک اسکیم کا اعلان کیا ہے ۔صدر اشرف غنی نے ایک تقریب کے دوران جو فوجیوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے منعقد کی گئی تھی میں اپنی جانیں قربان کرنے والے 14فوجیوں کے خاندانوں کو اپارٹمنٹس کی چابیاں دیں ۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے افغان صدر نے اگلے تین سالوں میں مزید خاندانوں کو اپارٹمنٹس دینے کا وعدہ کیا۔