160

  پیمرا کونئے ٹی وی چینلز کے لائسنس جاری کرنے سے روک دیاگیا 

 اسلام آباد۔ اسلام آباد ہائی کورٹ نے پیمرا کونئے ٹی وی چینلز کے لائسنس جاری کرنے سے ایک بار پھر روکتے ہوئے کہا ہے کہ آئندہ سماعت تک پیمرانئے ٹی وی چینلزلائسنس کی نیلامی کااجرانہ کرے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیف جسٹس اطہرمن اللہ کی زیرصدارت پیمرا کی جانب سے نئے ٹی وی چینلز کے لائسنس کے اجرا سے متعلق درخواست کی سماعت ہوئی۔پی بی اے کی جانب سے ایڈووکیٹ فیصل صدیقی اور وفاق کی جانب سے ڈپٹی اٹارنی جنرل طیب شاہ عدالت میں پیش ہوئے۔پی بی اے کی جانب سے ایڈووکیٹ فیصل صدیقی نے کہا کہ 80 چینلز کی گنجائش ہے 119 کے لائسنس پہلے ہی جاری ہوچکے ہیں، ان میں میڈیا نے پارٹی بنے کی درخواست دی، جس پر چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ نے دریافت کیا آپ کی متفرق درخواست کہاں ہے۔وکیل نے بتایا کہ کل متفرق درخواست جمع کرائی تھی رجسٹرار آفس نے اعتراض لگا دیا، آج اعتراض دور کر کے دوبارہ دائر کریں گے۔

چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے کہا آپ کو ویسے ہی سن لیتے ہیں آپ کیسے متاثرہ ہیں؟ جب تک ڈی ٹی ایچ نہیں آتا درخواست گزار کے مطابق محدود اسپیس ہے پیمرا اپنی ڈیوٹی سے بھول گیا ہے۔پیمرا کے وکیل نے عدالت کوبتایا کہ اٹھاون لائسنس جاری کئے گئے اٹھاون چینلز کی نیلامی کی 42 میں سے 15 فیصد رقم جمع کرا دی گئی۔پی بی اے کے وکیل کاکہناتھا کہ پیمرا نے جواب ہائی کورٹ میں جمع کرادیا، پی بی اے کو دیر سے موصول ہوا، پیمرا کا تحریری جواب پڑھنے کے بعد عدالت کی معاونت کر سکوں گا۔

اسلام آبادہائیکورٹ نے پیمرا کو لائسنس جاری کرنے سے روک دیا اور کہا آئندہ سماعت تک پیمرانئے ٹی وی چینلزلائسنس کی نیلامی کا اجرانہ کرے۔عدالت نے پی بی اے کے وکیل کی استدعا منظور کرتے ہوئے کیس کی سماعت تیس مئی تک ملتوی کردی۔