65

وزیر اعظم عمران خان اور چینی صد ر کی ملاقات طے 

بیجنگ۔وزیراعظم پاکستان عمران خان اور چین کے صدر شی جن پھنگ کی ملاقات 13جون کو شنگھائی تعاون تنظیم(ایس سی او)کے رکن ممالک کی  سربراہ کونسل کے19ویں اجلاس کے موقع پر ہوسکتی ہے۔

یہ اجلاس بشکیک میں منعقد ہورہا ہے،اس اجلاس کے موقع پر دونوں رہنماؤں کو باہمی دلچسپی کے دوطرفہ امور پر بات چیت کرنے کا موقع ملے گا۔دونوں ممالک ایک دوسرے کے اتحادی ہیں،اور ان میں مثالی تعلقات قائم ہیں دونوں ممالک آپس میں اعلیٰ سطح تبادلہ خیال اور اجلاسوں کے دوران باقاعدہ ملاقاتیں کرتے رہتے ہیں۔

چینی وزارت خارجہ کی ترجمان  لوکانگ نے گزشتہ روز اعلان کیا ہے کہ چین کے صدر شی جن پھنگ 12سے 16جون تک کرغستان اور تاجکستان کا سرکاری دورہ کریں گے،12سے 14جون تک صدر شی کرغستان کے دورے پر ہونگے،جہاں وہ ایس سی او کانفرنس میں شرکت کریں گے اور اس اجلاس میں آنے والے عالمی رہنماؤں سے ملاقاتیں کریں گے۔

دریں اثناء ایس سی او کے جنرل سیکرٹری ولادی میر ناروف نے اعلان کیا ہے کہ 19ویں کانفرنس13سے 14جون تک کرغستان کے شہر بشکیک میں منعقد  ہوگی، انہوں نے کہا کہ بشکیک کانفرنس ایس سی او رکن ممالک کے درمیان کثیر المقاصد تعاون کو مزید مضبوط بنانے میں اہم کردار ادا کرے گی۔ایس سی او ممالک کے سربراہ،مبصرین اور بین الاقوامی تنظیمیں بھی جو ایس سی او کے ساتھ تعاون کررہی ہیں کانفرنس میں شریک ہونگی۔

ایس سی او کے رکن ممالک کی تعداد 8ہے،4مبصر ممالک ہیں جبکہ 6ڈائیلاگ شراکت دار ہیں،رکن ممالک میں چین،بھارت،قازقستان،کرغستان،پاکستان،روس،تاجکستان اورازبکستان شامل ہیں،رکن ممالک عالمی معیشت میں 20فیصد سے زیادہ حصہ ادا کرتے ہیں،جبکہ یہ دنیا کی کل آبادی کا40فیصد ہے۔

ایس سی او کے سیکرٹری جنرل ناروف نے کہا ہے کہ کرغستان کی صدارت میں ایس سی او کی کامیابیوں کا بھی اجلاس میں جائزہ لیا جائے گا۔آئندہ تعاون کیلئے منصوبوں پر بات چیت کی جائے گی اورارگنائزیشن کی مزید ترقی کیلئے مواقع طے کیے جائیں گے،توقع ہے بشکیک کانفرنس میں  خطوں کے درمیان رابطوں کو مزید گہرا بنانے کیلئے دستاویز پردستخط ہونگے۔

منشیات کی سمگلنگ کے خلاف جدوجہد کو تیز کیاجائیگا،انفارمیشن ٹیکنالوجی،ماحول کے تحفظ،صحت عامہ اور کھیلوں کے شعبے میں تعاون مزید مضبوط بنایا جائے گا۔انہوں نے مزید کہا کہ افغان مسئلے کے حلمیں  ایس سی او کی رسائی کیلئے دوبارہ لائحہ عمل طے کیاجائیگا۔کیونکہ اعلیٰ سطح کی دہشتگردی افغانستان سے ہوتی ہے۔اقتصادی میدان میں ایس سی او کے رکن ممالک کے درمیان مالی،سرمایہ کاری، نقل وحمل،توانائی اور زراعت کے شعبوں میں تعاون میں مزید اضافہ کیا جائے گا۔