602

غیر قانونی ملازمین کی بھرتی سکینڈل کی تحقیقات مکمل

پشاور۔قومی احتساب بیورو خیبر پختونخوا نے اختیارات کے ناجائز استعمال اورسکیل 1سے سکیل چار تک 144غیر قانونی ملازمین کی بھرتی سکینڈل کی تحقیقات مکمل کرلی ہے اور تحصیل ناظم نوشہر ہ احد خٹک، سابقہ تحصیل نائب ناظم نوشہر زر عالم خان،سابق ایڈمنسٹرٹیوآفیسر تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن نوشہرہ اعجاز الدین، سابق چیف کوارڈینیٹنگ آفیسر ڈسٹرکٹ کونسل نوشہرہ محمد عقیل، سابق چیف کوارڈینیٹنگ آفیسر ڈسٹرکٹ کونسل نوشہراسد گل سمیت 15ملزمان کے خلاف ریفرنس احتساب عدالت میں دائر کردیا ہے۔

 ریفرنس میں گواہان کی تعداد پانچ ہے گزشتہ روز نیب کے تفتیشی افسر نے ریفرنس احتساب عدالت میں دائر کردیا نیب کے مطابق  ملزمان سابق ایڈمنسٹرٹیوآفیسر تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن نوشہرہ اعجاز الدین، سابق چیف کوارڈینیٹنگ آفیسر ڈسٹرکٹ کونسل نوشہرہ محمد عقیل، سابق چیف کوارڈینیٹنگ آفیسر ڈسٹرکٹ کونسل نوشہراسد گل،تحصیل میونسپل آفیسر نوشہرہ علی رضا،تحصیل میونسپل آفیسر نوشہرہ افضل خان، تحصیل میونسپل آفیسر آئی  اینڈ ایس سید ابرار علی شاہ، ڈسٹرکٹ آفیسر ایف  عامر نواز، تحصیل میونسپل آفیسر ایف سہیل ایوب، تحصیل میونسپل آفیسر ایف اعجاز سرور، تحصیل میونسپل آفیسر آئی اینڈ ایس  محمد سعید خان، چیف آفیسر تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن نوشہرہ فیضان خان، سابق تحصیل ناظم نوشہرہ  رضاء اللہ، تحصیل ناظم نوشہر احد خٹک  اورسابقہ تحصیل نائب ناظم نوشہر زر عالم خان پر الزام ہے کہ انہوں نے اختیارات کا ناجائزا ستعمال کرتے ہوئے 2013سے 2018تک کے دوران سکیل 1سے سکیل 4تک 144ملازمین غیر قانونی طریقے سے بھرتی کیئے۔

 نیب کے مطابق ملزمان نے ملی بھگت سے ڈسٹرکٹ ایمپلائمنٹ ایکسچینج نوشہرہ کو نظر انداز کرتے ہوئے تمام ملازمین کو اخبار میں بغیر اشتہار دیئے بھرتی کیے، مذکورہ ملازمین مخصوص کوٹہ پر بھرتی کیئے گئے، تمام ملزمان ڈیپارٹمنٹل سلیکشن کمیٹی کے ممبران بھی تھے جنہوں نے اپنے اختیار کا ناجائز استعمال کیا، ریفرنس میں کل پانچ گواہان ہیں۔