283

خواجہ سراؤں نے تھانہ گلبہار پر دھاوا بول دیا

پشاور۔تھانہ گلبہار سے چند قدم فاصلے گاڑی غلط پارک کرنے پر ڈرائیور کو چالان دینے کے تنازعہ پر خواجہ سراء ٹریفک پولیس اہلکار کا وائرلیس چھین لیا جس پر پولیس نے دو افراد کو گرفتار کیا تو خواجہ سراء مشتعل ہوگئے اور گلبہار تھانہ پر دھاوا بول دیا مشتعل خواجہ سراؤں نے توڑ پھوڑ ٗ پتھراؤ اور ہنگامہ آرائی کرتے ہوئے ایس ایچ او ٗ محرر ٗ ٹریفک اہلکار سمیت کئی اہلکاروں کو شدید زخمی کردیا پولیس نے لاٹھی چارج کرتے ہوئے13 خواجہ سراؤں سمیت 15 افراد کو گرفتار کر لیا۔

 صورتحال کشیدہ ہونے پر پولیس کی بھاری نفری طلب کی گئی کئی جی ٹی روڈ میدان جنگ میں بنا رہااے ایس پی گلبہار احمد زونیر چیمہ کے مطابق گزشتہ روز گلبہار نہر کے قریب ڈرائیور غلط سائیڈ پر آرہاتھاکہ اس دوران عبدالسلام نامی ٹریفک سب انسپکٹر نے اسے چالان دیاجس پر فرنٹ سیٹ پر بیٹھا دانش نامی خواجہ سراء آپے سے باہر ہوگیا اور ٹریفک اہلکار کا وائرلیس چھین فرار ہوگیا موقع پر جب گلبہار پولیس کی موبائل گاڑی آئی تو اور خواجہ سراء بھی پہنچ گئے اور تھانہ کے پر حملہ کرتے ہوئے توڑ پھوڑ شروع کردی ہنگامہ آرائی اور پتھراؤ سے ایس ایچ او گلبہار ماتھے پر راحت شاہ محرر ہاتھ ٗ ٹریفک اہلکار سر اور کانسٹیبل محفل خان زخمی ہوگئے۔

 اطلاع ملتے ہی پولیس کی بھاری نفری موقع پر پہنچ گئی اور ہنگامہ آرائی کرنے والے خواجہ سراؤں پر لاٹھی چارج کرتے ہوئے 2 ساتھیوں سمیت 15 خواجہ سراؤں ابو بکر عرف انمول ٗدانش عرف کالجی ٗحسنین عرف سویرا ٗحمید اللہ عرف ثنا بلوچ ٗسجاد عرف شبانہ امجد عرف نازو ٗبلال ٗارمان عرف گلالئی ٗشاکر عرف شینے ٗاسماعیل ٗاویس عرف گل پانڑہ ٗکاشف عرف طاہرہ ٗکاشف کوگرفتار کرلیا جبکہ وائرلیس بھی برآمد کرلیاگیا ہے۔

 حملے کے دوران مشتعل خواجہ سراؤں نے کرائمز سین ٗ بی ڈی یو اور چند نجی گاڑیوں پر پتھراؤ اور توڑ پھوڑ کرکے نقصان پہنچا یا جبکہ تھانہ کے اندر روزنامچہ کے دروزاے ٗ کھڑکیاں اور میزیں بھی توڑ دیں ابتدائی تحقیقات کے مطابق خواجہ سراؤں میں کچھ شرپسند افراد بھی شامل تھے جنہوں نے انہیں توڑ پھوڑ کرنے پر اکسایا جن کیخلاف تحقیقات جاری ہے۔  گلبہار تھانہ پر حملے اور توڑ پھوڑ کرنے کے بعد فرار ہونیوالے دیگر خواجہ سراؤں کی شناخت کرلی گئی ہے جن کی گرفتاری کیلئے چھاپوں کا سلسلہ جاری ہے پولیس کے مطابق مختلف مقامات پر لگے سی سی ٹی وی کیمروں کی فوٹیج حاصل کی گئی ہے جس میں فرار ہونیوالے خواجہ سراؤں کی شناخت کی گئی اور ان کی گرفتاری کیلئے چھاپوں کا سلسلہ جاری ہے۔

 اب تک کئی مقامات پر چھاپے مارے چکے ہیں لیکن تاحال مزید کوئی گرفتاری عمل میں لائی جاسکی۔ خواجہ سراؤں کی جانب سے توڑ پھوڑ کے دوران شہری ارباب سکندر خان خلیل فلائی اوور سمیت کئی مقامات پر اپنے موبائل فون سے ویڈیو بناتے رہے جبکہ پولیس کی جانب سے کئی افراد سے موبائل فون بھی چھینے گئے اور تشدد بھی کیاگیا جس پر شہریوں میں شدید اشتعال پایا گیاواضح رہے کہ گزشتہ روز جب خواجہ سراؤں کی جانب سے تھانہ پر حملہ کیاگیا تو شہری اپنے موبائل فونز سے ویڈیو بناتے رہے۔