274

خیبر پختونخوا میں مالی امور کی مانیٹرنگ کا فیصلہ

پشاور۔وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا نے صوبائی محکمہ خزانہ میں مالی امور کی مانیٹرنک کے لئے ”انٹرنل سپورٹ یونٹ“ کے قیام کے لئے 14 نئے ملازمین کی تقرری کی سمری کی منظوری دے دی ہے یہ یونٹ وزیر خزانہ کے دفتر میں قائم کیا جائے گا۔

سمری کے مطابق یہ انٹرنل سپورٹ یونٹ محکمہ خزانہ میں وزیر خزانہ کے دفتر میں قائم کیا جارہاہے جس کی پہلی ہی منظوری دی جا چکی ہے تاہم اس یونٹ کے لئے مارکیٹ سے ایم پی سکیلز میں 14 افراد کی تقرری کی جارہی ے جن میں اقتصادی تجزیہ کار اور سوشل سیکٹر سیکشن کے لئے ایم پی ون سکیل میں 2 سنٹر ایسوسی ایٹ ایم پی ٹو سکیل میں 4 سنٹر ایسوسی ایٹ ایم پی ٹو سکیل میں 4 ایسوسی ایٹ جبکہ ایم پی تھری سکیلز میں 8 انلاسٹ شامل ہیں سمری کے مطابق ان آسامیوں کے لئے بڑے اخبارات میں مشتہر کیا گیا ہے جبکہ ان آسامیوں کے لئے ٹی او آرڈر اٹرمز آف ریفرنس کی بھی پہلے ہی منظوری دی جا چکی ہے۔

 اس سے قبل اسٹیبلشمنٹ ڈیپارٹمنٹ نے اس حوالے سے ارسال کی گئی سمری پر تحفظات کااظہار کرتے ہوئے واضح کیا تھا کہ محکمہ سٹیبلشمنٹ میں پہلے سے ہی سٹاف کی تقرری کی پالیسی موجود ہے جس میں تمام ملازمین کی تقرری لاگو ہوتی ہے اس لئے اس حوالے سے دستاویزات میں بھرتی کا طریقہ کار برائے آسامیاں آف آئی ایس یو ”انٹرنل سپورٹ یونٹ“  شامل کیا جائے اسی طرح دستاویزات میں وزارت خزانہ کے الفاظ شامل کئے گئے ہیں جبکہ وزارت خزانہ وفاقی حکومت میں استعمال کئے جاتے ہیں۔

 صوبے میں محکمہ خزانہ کہلاتا ہے اس لئے وزارت خزانہ کی بجائے محکمہ خزانہ کے الفاظ شامل کئے جائیں اسی طرح مذکورہ یونٹ میں ایم پی اے میں ”ٹیم لیڈر“ اور ایم پی ٹو میں ایسوسی ایٹس کی تقرری کے لئے بیلچر ڈگری اور 16 سال تعلیم کی اپیلٹ رکھی گئی ہے جس میں تضاد نظر آرہا ہے کیونکہ بچلر ڈگری 14 سال میں مکمل ہوتی ہے جس پر محکمہ خزانہ نے جواب دیا کہ ایم پی سکیلز میں تقرری کے لئے اس وقت کوئی پالیسی موجود نہیں ہے۔

 تاہم وزارت کے الفاظ ختم کر کے اس کی جگہ محکمہ خزانہ شامل کیا گیا جبکہ 16 سالہ تعلیمی اہلیت کے جواب میں بتایا گیا کے حکومت نے 4 سالہ بیلچر ڈگری متعارف کرائی ہے اس کے ایکٹ بیلچر ڈگری رکھی گئی ہے جس پر وزیر اعلیٰ نے سمری کی منظوری دے دی ہے۔